ڈیرہ،ڈاکٹر پر تشدد کیخلاف مختلف ہسپتالوں میں ڈاکٹروں کی ہڑتال

ڈیرہ،ڈاکٹر پر تشدد کیخلاف مختلف ہسپتالوں میں ڈاکٹروں کی ہڑتال

ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ)خیبرپختونخوا کے وزیرصحت ڈاکٹرہشام اللہ مروت اوران کے گارڈز کی طرف سے اسسٹنٹ پروفیسرخیبرمیڈیکل کالج پشاور ڈاکٹرضیاء اللہ آفریدی پرتشددکے خلاف ضلع ڈیرہ اسماعیل خان کے ڈسٹرکٹ ہیڈکواٹر ٹیچنگ ہسپتال،مفتی محمودہسپتال اورگومل میڈیکل کالج سمیت تحصیل ہیڈکواٹرزپہاڑپور،کلاچی،پروا، کوٹ جائی،بندکورائی اورپولیس لائن ہسپتال میں ڈاکٹرزنے احتجاجاًکام بندرکھا۔ہڑتالی ڈاکٹرز کی قیادت پروفیشنل ڈاکٹرزایسوسی ایشن خیبرپختونخواکے وائس چیئرمین ڈاکٹرمحمدرضوان راجپوت،صدرپروفیشنل ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ڈیرہ اسماعیل خان ڈاکٹرفاروق گل بیٹنی،چیئرمین ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ڈاکٹرزفضیل الرحمان اورآرتھوپیڈک سرجن ڈاکٹرشکیل شاہ نے کی۔محکمہ صحت کے تمام مراکزپر ڈاکٹرز نے کام بندرکھاجس میں اوپی ڈی بھی بندرہی صرف ایمرجنسیاں کھلی رہیں۔ اس موقع پرڈاکٹرمحمدرضوان راجپوت، ڈاکٹرفاروق گل بیٹنی اورڈاکٹرفضیل الرحمان نے میڈیا کو بتایاکہ اس واقعے کے بعدوزیرصحت خیبرپختونخوااستعفیٰ دیں اوران کے خلاف مقدمے کا اندراج کیاجائے اسی طرح تھانہ یونیورسٹی ٹاؤن پشاور کے ڈی ایس پی کی طرف سے مزاکرات کے بہانے ڈاکٹرزپر تشددکے واقعے پرمتعلقہ ڈی ایس پی کو بھی برطرف کیاجائے۔انہوں نے کہاکہ اگرہمارے جائز مطالبے پورے نہ ہوئے توآج بروز جمعتہ المبارک ڈاکٹرزاحتجاجاًبازوؤں پرکالی پٹیاں باندھیں گے اورجلوس بھی نکالیں گے۔

مزید : صفحہ اول