جیل سے رہائی کے بعد پی ٹی آئی رہنما علیم خان کو کونسا عہدہ دیا جانے کا امکان ہے؟ تحریک انصاف نے سر جوڑ لیے

جیل سے رہائی کے بعد پی ٹی آئی رہنما علیم خان کو کونسا عہدہ دیا جانے کا امکان ...

لاہور (ویب ڈیسک )سابق سینئر صوبائی وزیر عبدالعلیم خان کی ضمانت ہونے کے بعد انہیں پارٹی کے اندر اور حکومت میں کوئی اہم عہدہ دینے کے حوالے سے تحریک انصاف کی قیادت نے سر جوڑ لئے ، انہیں ان کے پرانے قلمدان ،سینئر صوبائی وزیر اورمحکمہ بلدیات کی وزارت ملنے یا پنجاب میں وفاق کا نمائندہ بنائے جانے کا امکان ہے ،لیکن کسی بھی عہدے کی پیشکش کے بعد عبدالعلیم خان کا اپنا فیصلہ کیا ہو گا اس پر کچھ کہنا قبل از وقت ہو گا۔انکی آج ضمانت پر رہائی کا قوی امکان ہے۔روزنامہ دنیا کے مطابق عبدالعلیم کی 6 فروری2019 کو گرفتاری سے لیکر اب تک سینئر صوبائی وزیر کا عہدہ خالی ہے تاہم بلدیات کی وزارت کااضافی چارج صوبائی وزیر قانون و پارلیمانی امور راجہ بشارت کو دیا گیا ، عبدالعلیم نے اپنی وزارت کے دوران نئے بلدیاتی نظام کے لئے غیر معمولی حد تک کام کیا جسے وزیر اعظم عمران خان نے بھی سراہا تھا اور عبدالعلیم خان کا ہی بنایا ہوا بلدیاتی بل پنجاب حکومت نے پنجاب اسمبلی سے منظور کر ایا۔ اخباری ذرائع کا دعویٰ ہے وزیر اعظم عمران خان کو عبدالعلیم خان کو ان کا پرانا عہدہ اوروزارت دینے میں کوئی اعتراض نہیں ، علاوہ ازیں تحریک انصاف کی قیادت کے پاس عبدالعلیم خان کے لئے اور بھی آپشن موجود ہے کہ انہیں پنجاب میں وفاق کا نمائندہ مقررکر دیا جائے یا انہیں پارٹی میں کسی اہم عہدے کی پیشکش کی جائے ، چونکہ عبدالعلیم خان ایک وقت میں پارٹی عہدے یا وزارت میں سے کوئی ایک عہدہ اپنے پاس رکھ سکتے ہیں اس لئے زیاد ہ امکانات یہ ہیں کہ انہیں سابق قلمدان سونپ دئیے جائیں۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور