خرگوش کے اس مجسمے میں ایسی کیا خاص بات ہے کہ اس کی قیمت ڈیڑھ ارب روپے ہے

خرگوش کے اس مجسمے میں ایسی کیا خاص بات ہے کہ اس کی قیمت ڈیڑھ ارب روپے ہے
خرگوش کے اس مجسمے میں ایسی کیا خاص بات ہے کہ اس کی قیمت ڈیڑھ ارب روپے ہے

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) قدیم لیجنڈ فنکاروں کے فن پارے اربوں روپے میں فروخت ہوتے ہیں لیکن گزشتہ دنوں ایک امریکی فنکار کا بنایا ہوا ایک خرگوش کا مجسمہ اتنا مہنگا فروخت ہو گیا ہے آج تک کسی زندہ فنکار کا کوئی فن پارہ اتنا مہنگا فروخت نہیں ہوا۔ میل آن لائن کے مطابق یہ یہ مجسمہ سٹیل کا بنایا ہے جو جیف کونز نامی آرٹسٹ نے 1986ءمیں بنایا تھا۔ گزشتہ دنوں نیویارک میں کرسٹیز پر اس کی نیلامی ہوئی جہاں یہ 9کروڑ 11لاکھ ڈالر (تقریباً ساڑھے 13ارب روپے) میں فروخت ہوا۔

جیف کونز کے ایسے ہی شاہکار پہلے بھی بہت مہنگے فروخت ہو چکے ہیں جو ارب پتی افراد نے خریدے، ان کے فن پارے ارب پتی افراد کے لیے ’الٹی میٹ ٹرافی‘ (Ultimate Trophy) کی طرح ہوتے ہیں جنہیں وہ ہاتھوں ہاتھ لیتے ہیں۔ تاہم پہلے ان کا کوئی فن پارہ اتنا مہنگا نہیں بکا تھا۔ خرگوش کے اس 14انچ بلند مجسمے کی قیمت اتنی زیادہ ہونے کی وجہ کھرب پتی شخص رابرٹ منوچین کا بولی میں شریک ہونا تھا جو ایک آرٹ ڈیلر بھی ہے۔ رابرٹ منوچین کی بیٹی سٹیون منوچین اس وقت امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ کی سیکرٹری برائے خزانہ ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس