30کھرب ڈالر کا ریکارڈ پیکیج منظور،عوام کو ریلیف دینے پر امریکی ایوان نمائندگان اور صدر ٹرمپ آمنے سامنے

30کھرب ڈالر کا ریکارڈ پیکیج منظور،عوام کو ریلیف دینے پر امریکی ایوان ...

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی ایوان نمائندگان نے جہاں مخالف ڈیمو کریٹک پارٹی کی اکثریت ہے کورونا وائرس سے عوام کو ریلیف دینے کیلئے ایک نئے ریکارڈ پیکیج کو منظور کر لیا ہے جس کی مالیت تیس کھرب ڈالر ہے، قبل ازیں کانگریس نے صدر ٹرمپ کی تائید سے تین کھرب ڈالر کاریلیف پیکیج منظور کیا تھا جس کے چوتھے اور آخری مرحلے پر عملدرآمد باقی ہے، اب ایک مرتبہ پھر کانگریس کے ایوان زیریں ایوان نمائندگان میں ڈیمو کریٹک پارٹی نے اپنی اکثریت کے بل بوتے پر پہلے پیکیج سے دس گنا بڑا تیس کھرب ڈالر کا ریلیف بل منظو ر کر لیا ہے، اس طرح عوام کو مزید ریلیف دینے کے معاملے پر صدر ٹرمپ اور ایوان نمائندگان میں ٹھن گئی ہے، سینیٹ میں چونکہ حکمران ری پبلکن پارٹی کی اکثریت ہے،اسلئے توقع ہے یہ بل وہاں منظوری حاصل نہیں کر سکے گا، اور خود ہی ختم ہو جائے،تا ہم صدر ٹرمپ نے دھمکی دی ہے کہ اگر یہ بل ان کے ڈیسک تک پہنچا تو وہ اسے ویٹو کردیں گے، کانگریس کے ایوان نمائندگان میں اس دوسرے ریلیف پیکیج کو 199 کے مقابلے پر 208 ووٹوں سے منظور کر لیا گیا۔ ری پبلکن پارٹی ایوان نمائندگان میں اس بل کی مزاحمت میں ناکام رہی، لیکن وہ سینیٹ میں اپنی معمولی اکثریت کی وجہ سے وہاں بل پہنچنے پر اسے روک دینے کا ارادہ رکھتی ہے، ری پبلکن پارٹی کا موقف ہے کہ اب مزید رقم خرچ کر کے خزانے پر بوجھ نہ ڈالا جائے، اس کی بجائے اصل توجہ کاروبار کھولنے اور ٹیکس میں مزید رعایت دینے پر صرف کی جائے۔ صدر ٹرمپ بھی یہ کہتے ہیں کہ وہ مناسب وقت پر اپنے ریلیف پیکیج کے چوتھے مرحلے پر عملدرآمد کریں گے، جو امریکی عوام کیلئے بہت سود مند ہو گا، اس وقت ایوان نمائندگان میں ڈیمو کریٹک پارٹی نے جو بل منظور کرایا ہے،اس میں بیروزگار ہوئے افراد کی مدد، خوراک کی فرا ہمی، کرایوں اور گھروں کی قسطیں دینے سے قاصر شہریوں کو مالی امداد دینے اور صحت عامہ پر کثیر رقم خرچ کرنے کی تجاویز شامل ہیں۔

امریکی ریلیف پیکیج

مزید :

صفحہ اول -