کرونا وائراس کا حملہ، ملتان، ڈیرہ میں 3ہلاکتیں، نشتر سے 64افراد ڈسچارج

کرونا وائراس کا حملہ، ملتان، ڈیرہ میں 3ہلاکتیں، نشتر سے 64افراد ڈسچارج

  

ملتان،ڈیر(نمائندہ خصوصی،سٹی رپورٹر)نشتر ہسپتال میں کورونا میں مبتلا ایک اور شخص نے دم توڑ دیا،نشتر ہسپتال میں کورونا کے باعث ہونے والی اموات کی مجموعی تعداد 55 ہو گئی، آئی سو لیشن کے چھ وارڈز میں کورونا میں مبتلا زیر علاج مریضوں کی تعداد 37 ہو گئی 64 صحت یاب ہو کر گھروں کو روانہ کر دئیے گئے ہیں، تفصیل کے مطابق نشتر ہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈ میں زیر علاج کورونا میں مبتلا ملتان کے رہائشی 63 سالہ (بقیہ نمبر10صفحہ6پر)

خالد نے ہفتہ کی دوپہر دم توڑ دیا یوں یکم اپریل سے 16 مئی کے درمیان نشتر ہسپتال میں کورونا کے باعث ہونے والی اموات کی مجموعی تعداد 55ہو گئی ہے جبکہ نشتر ہسپتال کے چھ آئی سو لیشن وارڈز میں اس وقت کورونا میں مبتلا 37مریض زیر علاج ہیں جبکہ 03 مریضوں کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے،جبکہ کورونا کے شبہ میں 10مریض زیر علاج ہیں,جن کی رپورٹس کا انتظار ہے،ادھر فوکل پرسن نشتر ہسپتال ڈاکٹر عرفان ارشد کے مطابق نشتر ہسپتال میں اب تک ملتان سمیت جنوبی پنجاب بھر اور قرنطینہ،تبلیغی مراکز سے لائے گئے 8068 افراد کے نمونوں کے کورونا کے تشخیصی ٹیسٹ کئے گئے جن میں سے 893 افراد میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ نشتر ہسپتال سے 64 افراد کو کورونا سے صحت یاب ہونے پر ڈسچارج بھی کیا جا چکا ہے۔ڈیرہ غازی خان ٹیچنگ ہسپتال میں کوروناوائرس کے دومشتبہ مریض جاں بحق ہوگئے دونوں کودوروزقبل تشویشناک حالت میں ہسپتال لایاگیاتھا ذرائع کے مطابق ٹیچنگ اسپتال ڈی جی خان کے آئسولیشن وارڈ میں زیر علاج کروناوائرس کے دو مشتبہ مریض جاں بحق ہوگئے دونوں مریضوں کو دو روزقبل تشویشناک حالت میں ہسپتال لایاگیا تھا تاہم کوروناوائرس کی علامات ظاہر ہونے پر دونوں مریضوں کے نمونے حاصل کر کے ٹیسٹ کے لیے لیبارٹری بھجوائے گئے تھے جن میں سے جاں بحق ہو نے والے حاجی محمد کی رپورٹ نیگٹو آئی ہے جبکہ الٰہی بخش کی ٹیسٹ رپورٹ آنا باقی ہے جو آئندہ ایک سے دو روز میں موصول ہو جا ئے گی جان بحق ہونے والے دونوں مشتبہ مریضوں کی شناخت حاجی محمد اور الہی بخش کے ناموں سے ہوئی ہے جن کا تعلق تونسہ شریف اور تحصیل کوٹ چھٹہ کے علاقہ خان پور منجوالہ سے ہے اس سلسلہ میں رابطہ کر نے پر ایم ایس ٹیچنگ ہسپتال ڈاکٹر شاہد حسین مگسی اور ترجمان ٹیچنگ ہسپتال ڈاکٹر خالد تحسین نے بتایا کہ جان بحق ہونے والے مریضوں کو ایس او پی کے مطابق ایمبولینس کو مکمل سپرے اور دیگر انتظامات کے ساتھ ورثا کے حوالے کیا گیا ہے اور تدفین بھی سرکاری احکامات کے مطابق کر دی گئی ہے۔ نشتر ہسپتال میں انتظامی نا اہلی کے باعث کورونا میں مبتلا مریضوں کی میتیں لینے کے لئے لواحقین دو دو روز تک ہسپتال کے چکر کاٹنے پر مجبور ہو چکے ہیں جمعہ کے روز دوپہر 2 بجے کورونا میں مبتلا ریلوے کے سابق ٹکٹ چیکر عبداللہ خان کا انتقال ہوا جس کے بعد میت کو وارڈ 22 منتقل کر دیا گیا تاہم کورونا پازیٹیو ہونے کے باوجود 24 گھنٹے تک میت وارڈ 22 میں پڑی رہی اس دوران لواحقین جمعہ کو رات گئے تک ہسپتال اور وارڈ کے چکر کاٹتے رہے رات ڈیوٹی پر موجود ڈی ایم ایس اپنے دفتر سے غائب رہے جبکہ لواحقین گارڈز سے رہنمائی لیتے رہے ادھر وارڈ 22 کی جانب سے لواحقین کو ہی ایمبولینس کا بندوبست کرنے کا کہا گیا تاہم لواحقین کے احتجاج کے بعد بھی میت ہفتہ کی صبح ایس او پیز کے تحت لواحقین کے حوالے کر کے تدفین کا عمل مکمل کیا گیا،ادھر نشتر ہسپتال کی پتھالوجی لیبارٹری میں کورونا ٹیسٹنگ کے حوالے سے سنگین بے ضابطگیاں سامنے آئی ہیں ٹیسٹ رپورٹس میں ہونے والی تاخیر کے باعث شبہ میں دم توڑنے والے بیشتر افراد کی میتیں دو دو روز تک وارڈز میں پڑی رہتی ہیں جبکہ اس دوران لواحقین انتظامی ڈاکٹروں سے جھگڑا کرتے ہیں،جبکہ بیشتر شبہ میں آئے مریضوں کے نمونے تک لینے کے لئے اکثر چوبیس چوبیس گھنٹے انتظار کروایا جاتا ہے،ان تمام معاملات پر ڈی ایم ایس ایڈمن ڈاکٹر زاہد سنجرانی نے بڑا قدم اٹھاتے ہوئے ایم ایس نشتر ہسپتال کو آگاہ بھی کیا تھا جس پر نشتر ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر شاہد بخاری نے پروفیسر آف پتھالوجی کو مراسلہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ پتھالوجی لیبارٹری سے مختلف شکایات جن کا ڈاکٹر زاہد ذکر کیا باالکل درست ہیں،لیبارٹری سٹاف کی جانب سے کی جانے والی کالز کا بروقت جواب نہیں دیا جاتا،کورونا ٹیسٹ رپورٹس میں تاخیر لواحقین کا غم و غصہ بڑھاتی ہے،ٹیسٹ رپورٹس میں غیر معمولی تاخیر کی جا رہی ہے جبکہ بسا اوقات لیبارٹری سٹاف سیمپل تک لینے سے انکار کر دیتا ہے،تاہم اس حوالے سے بھی کوئی مثبت پیش رفت سامنے نہیں آئی جبکہ ادھر رسیکیو 1122 کی جانب سے کورونا مریضوں کی میتیں لے جانے سے انکار کے بعد مسائل مزید بڑھ چکے ہیں جس کے بعد ایدھی ایمبولینس سروس کی خدمات لی گئی ہیں تاہم وہ یہ بوجھ اٹھانے سے قاصر دکھائی دے رہے ہیں۔

جاں بحق

مزید :

ملتان صفحہ آخر -