وفاقی حکومت کرونا کے بجائے صوبوں سے لڑنے میں مصروف ہے‘ فائزہ رشید

وفاقی حکومت کرونا کے بجائے صوبوں سے لڑنے میں مصروف ہے‘ فائزہ رشید

  

پشاور (سٹی رپورٹر) کرونا وائرس کے حوالے سے کہیں بھی حکومتی سنجیدگی نظر نہیں آ رہی ہے، ایک طرف سپریم کورٹ کا کرونا وائرس کے حوالے سے ناکافی اقدامات پر نوٹس وفاقی حکومت کے خلاف چارج شیٹ ہے، تو دوسری جانب صوبے کے سب سے بڑے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں کرونا سے نمٹنے کیلئے ہسپتال انتظامیہ کی مریضوں کو خاطر خواہ سہولیات نہ دینا اور ناقص انتظامات پر دو سینئر ڈاکٹروں کا استعفیٰ صوبائی حکومت کی کرونا کے حوالے سے سنجیدگی کو صاف ظاہر کرتا ہے، ان خیالات کا اظہار پاکستان پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی سینئر رہنما اور سابقہ پارلیمنٹرین ڈاکٹر فائزہ رشید نے کرونا وائرس کے حوالے حکومتی رویئے اور ناقص اقدامات کے بارے میں اپنے ایک اخباری بیان میں کہی انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کرونا کی بجائے صوبوں سے لڑنے میں مصروف ہے جو کہ بے حسی اور غیر سنجیدگی کی انتہا ہے،سابقہ پارلیمنٹرین ڈاکٹر فائزہ رشید نے کہا کہ اب جبکہ ملک میں ایمرجنسی کی جیسی کیفیت ہے تو حکومتی وزراء کو چاہیے کہ تمام صوبوں کے درمیان اتفاق رائے پیدا کرے اور اپنے چہروں پر ماسک لگانے کے ساتھ ساتھ زبان کو بھی تالے لگا لیں، جبکہ دوسری جانب بجائے اس کے کہ غریبوں کو راشن صرف فلاحی تنظیمیں دے رہی ہیں تو بھی اس حوالے سے حکومت فرنٹ لائن پر آکر اقدامات کرے۔ ڈاکٹر فائزہ رشید نے وفاقی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے مزید کہا کہ کرونا پر حکومت کی ابتک کوئی حکمت عملی نظر نہیں آرہی اور حکومت کی جانب سے اپنے اراکین اسمبلی کو جاری کردہ اربوں روپے کے فنڈز کی بجائے اس فنڈز کو کرونا کے خلاف جنگ پر لگانا چاہیے تھا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -