سندھ حکومت کے دوہرے معیار ات سے فرقہ واریت کو ہوا مل رہی ہے:حافظ نعیم الرحمٰن

 سندھ حکومت کے دوہرے معیار ات سے فرقہ واریت کو ہوا مل رہی ہے:حافظ نعیم الرحمٰن

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کے دوہرے معیارات سے فرقہ واریت کو ہوا مل رہی ہے،کرونا وائرس کی وباسے بچاؤ کے لیے لاک ڈاؤن اور پابندیوں کا سلسلہ دوماہ سے جاری ہے جس میں بتدریج سختی اور نرمی کی جاتی رہی، کاروبار اور مارکیٹیں کھلنے میں کئی ہفتے لگ گئے اور اب بھی کاروبار جزوی طور پر ہی بحال ہوا ہے جبکہ ٹرانسپورٹ مکمل طور پر بند ہے، لاک ڈاؤن کے دوران مساجد بھی پابندیوں کی زد میں آئیں اور لوگوں کے لیے نماز جمعہ اور رمضان المبارک میں تراویح کی ادائیگی بھی مشکل ہوگئی اور یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ گزشتہ چند دنوں میں ایک طرف تو تاجروں پر 10لاکھ جرمانے کا ناجائز قانون بنایاگیا ہے جس سے رشوت خوری کا نیا کاروبار شروع ہوگیا تو دوسری جانب من پسند افراد کو تمام ایس اوپیز بالائے طاق رکھنے کی کھلی اجازت دی گئی۔جس کے باعث عوام کی اکثریت میں بے چینی اور اضطراب کا پیدا ہونے ایک فطری عمل ہے۔لاک ڈاؤن کے حوالے سے عوام پرجب مختلف پابندیاں لگائی گئی ہیں اور سختیاں کی جارہی ہیں تو اس کا اطلاق سب پر یکساں ہونا چاہیے لیکن ایسا دیکھنے میں نہیں آیا۔حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ حکومت لاک ڈاؤن کے باعث پیدا ہونے والے مسائل کے حل میں ناکام ہوگئی ہے اب اس طرح کے اقدامات اور فیصلوں سے حکومت اپنا اعتبار مسلسل کھورہی ہے اور عوام کے ذہنوں میں بہت سے سوالات اور شکوک و شبہات پیدا ہورہے ہیں جن کودور کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے مطالبہ کیا ہے کہ ہجوم کو کم کرنے کے لیے مارکیٹوں کے کھلنے کے ایام اور دورانیہ بڑھایا جائے،سڑکوں اور بازاروں کی مینجمنٹ پولیس اور ٹریفک پولیس سے کروائی جائے۔#

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -