آج بھی اپنے نام کے ساتھ معین کانام لکھ دیتا ہوں، انورمقصود

  آج بھی اپنے نام کے ساتھ معین کانام لکھ دیتا ہوں، انورمقصود

  

کراچی (این این آئی)مایہ نازلکھاری اور میزبان انور مقصود نے انسٹا پر مداحوں کے پوچھے گئے سوالات کے جوابات میں چند سنہری یادیں تازہ کیں۔انور مقصود کے بیٹے گلوکار بلال مقصود نے انسٹا پر ویڈیو شیئر کی جس میں وہ اپنے مداحوں کی جانب سے پوچھے گئے 10 منتخب کردہ سوالات کے جواب دے رہے ہیں۔اپنی جائے پیدائش حیدرآباد دکن کی سب سے اچھی یاد سے متعلق سوال پرانور مقصود نے کہا وہاں ہمیں کوئی مہاجر نہیں کہتا تھا۔زندگی میں سب سے مضبوط نکتہ کیا سیکھا؟ انور مقصود نے کہاکہ پیسے کا ہونا بری بات نہیں لیکن اس کے پیچھے بھاگنا نہیں چاہیے، خواہشات انسانی زندگی میں تباہی پھیردیتی ہیں، جو پاس ہو اسے بہت سمجھ کرزندگی گزاریں توراستے آسان ہوں گے۔بطورایک قوم پاکستانی قوم کب جاگے گی جیسا سوال پوچھے جانے پر انور مقصود نے کہا کہ خاصا مشکل سوال ہے، میرے خیال سے جتنے مارننگ شوز آگئے ہیں، ان کے ختم ہونے کے بعد قوم سو کراٹھے گی تب جاگے گی۔انور مقصود سے پوچھے گئے چوتھے سوال میں انہیں پینٹنگ اوررائٹنگ میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنے کو کہا گیا تو انہوں نے جواب دیا کہ ایک پرابلم ہے کہ پینٹنگ اور رائٹنگ نے مجھے منتخب کیا ہے۔معین اختر کے ساتھ انور مقصود نے بہت زیادہ کام کیا، ان کی یاد آنے سے متعلق سوال پر انورمقصود نے شعر پڑھتے ہوئے کہا میں نے 32 سال معین کیلئے لکھا،کہتے ہیں مرنے والے یہاں سے گئے، سب یہیں رہ گئے کہاں سے گئے، تو معین یہی ہے ہرگھر میں ہے اور ہر ایک کے دل میں ہے۔معین اختر کے ساتھ مقبول ترین شو لوز ٹاک میں برسوں کام کرنے والے انور مقصود نے انکشاف کیا کہ اکثر میں لوز ٹاک جیسا کوئی پروگرام لکھوں تو اپنا نام لکھنے کے بعد اگلی لائن میں معین کا نام بھی لکھ دیتا ہوں، جو کاٹ کرکسی اور کا نام لکھنا پڑتا ہے۔زندگی کا سب سے مشکل دور بیان کرتے ہوئے انور مقصود نے کہا کہ بینکنگ کا 5 سالہ دورزندگی کا مشکل ترین دورتھا لیکن اسی دور نے 2 راستے دکھائے جن پر چل کرآج یہاں تک پہنچا۔بلال مقصود نے پاکستانی عوام کی جانب سے ترک ڈراموں کو پسند کرنے کے جنون سے متعلق سوال پوچھا جس کے جواب میں انہوں نے کہا وہ ترکی ہیں ہم ٹھرکی ہیں، اسی لیے پیچھے پڑے ہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -