کورونا وائرس ، ترکی نے پاکستانیوں سمیت 30ممالک کیلئے اپنے ملک کے دروازے کھول دیئے ، کون کون لوگ جا سکتے ہیں ؟ اعلان ہو گیا

کورونا وائرس ، ترکی نے پاکستانیوں سمیت 30ممالک کیلئے اپنے ملک کے دروازے کھول ...
کورونا وائرس ، ترکی نے پاکستانیوں سمیت 30ممالک کیلئے اپنے ملک کے دروازے کھول دیئے ، کون کون لوگ جا سکتے ہیں ؟ اعلان ہو گیا

  

انقرہ (ڈیلی پاکستان آن لائن )کورونا وائرس کے باعث پوری دنیا میں کسی نہ کسی صورت میں لاک ڈاون جاری ہے تاہم کئی ممالک میں اس میں نرمی کی گئی توواپس کیسز میں اضافہ ہونا شروع ہو گیاہے لیکن پاکستان کا دوست ملک ترکی اس کے خلاف جنگ میں کامیابی کے ساتھ آگے بڑھ رہاہے اور ایسے مشکل حالات میں دل بڑا کرتے ہوئے پاکستانیوں کو خوشخبری سنا دی ہے۔

ایکسپریس ٹریبیون کی رپورٹ کے مطابق ترکی نے پابندیوں میں نرمی کرتے ہوئے پاکستان سمیت 30 دیگر ممالک سے کورونا وائرس سے محفوظ لوگوں کو آئندہ ہفتے سے علاج کی غرض سے ملک آنے کی اجاز ت دینے کا اعلان کر دیاہے۔ترکی کی جانب سے اس حوالے سے نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیاہے جس میں مریضوں کی حالت ، ملک میں داخلے ، ہسپتال میں علاج اور آئیسولیشن سے متعلق ضروری شرائط بھی وضع کر دی گئی ہیں۔

جن ممالک کے شہروں کو اجازت دی گئی ہے ان میں پاکستان ، لیبیا ، عراق ، کرغرستان ، آذربائیجان ، جارجیا، ترکمانستان ، ازبکستان ،یونان، یوکرین ، روس ، الجیریا ، البانیا ، کوسووو، میکا ڈونیا ، ڈی جی بوتی ، بوسنیا ، رومانیہ ، سربیہ ، بلغاریہ ، سومالیہ ، کویت ، قطر ، بحرین ، اومان ،جرمنی ، برطانیہ ، مالڈووا ، نیدر لینڈ اور ترکش سائپرس شامل ہیں۔

نوٹیفکیشن میں بتایا گیاہے کہ آرتھوپیڈکس اینڈ ٹراماٹولوجی ، جنرل سرجری ، پیڈیاٹرک سرجری ، یورولوجی ، آنکھوں کی بیماریوں ، دل کے امراض ، کارڈیو واسکولر سرجری ، سرجیکل آنکولوجی ، میڈیکل آنکولوجی ، آنکولوجی سرجری ، ریڈی ایشن آنکولوجی ، دماغ کی سرجری ، ہیماٹولوجی ، آرگن ٹرانسپلانٹ اور بون میرو ٹرانسپلانٹ سے متعلق مریضوں کی علاج کیلئے درخواستیں قبول کی جائیں گی۔

ترکی کی جانب سے فراہم کردہ ہدایات میں بتایا گیاہے کہ 20 مئی سے زیادہ سے زیادہ ایک مریض کے ساتھ دو افراد کو آنے کی اجازت ہو گی ،ترکی میں داخل ہوتے ہی مریضوں اور ساتھ آنے والوں کے کورونا ٹیسٹ کیے جائیں گے جس کے بعد صرف ان لوگوں کو داخلے کی اجازت دی جائے گی جن کے ٹیسٹ منفی آئیں گے۔

اس کے بعد مریضوں اور ساتھ آنے والوں کو سیدھا ہسپتال لے جایا جائے گا جہاں ان کی ڈاکٹر کے ساتھ ملاقات ہو گی اس کے علاوہ انہیں کہیں اور جانے کی سہولت نہیں دی جائے گی۔

مزید :

بین الاقوامی -