مال روڈ پر خاتون کو مبینہ طور پر ہراساں کرنے والے ٹریفک وارڈ ن کو ادارے نے سزا دیدی 

مال روڈ پر خاتون کو مبینہ طور پر ہراساں کرنے والے ٹریفک وارڈ ن کو ادارے نے سزا ...
مال روڈ پر خاتون کو مبینہ طور پر ہراساں کرنے والے ٹریفک وارڈ ن کو ادارے نے سزا دیدی 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )مال روڈ پر گاڑی میں اپنی بیٹی کے ساتھ سفر کرتی خاتون کو مبینہ طور پر ہراساں کرنے کے الزام پر ٹریفک پولیس نے سمیع اللہ نامی اہلکار کو معطل کر دیاہے اور محکمانہ کارروائی کا آغاز کر دیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق مریم ایس خان نامی ٹویٹر صارف نے سوشل میڈیا سائٹ پر پیغام جاری کرتے وارڈن کی تصاویر شیئر کیں اور کہا کہ ” گزشتہ روز دوپہر کے تقریبا ساڑھے 12 بجے جب میں اپنی بیٹی کے ساتھ گاڑی میں سفرکرتی ہوئی ” جی او آر ون “ کے ٹریفک سنگل پر پہنچی تو اس سمیع اللہ نامی ٹریفک وارڈن نے مجھے ہراساں کرنے کی کوشش کی جس کی تصاویر میں جاری کر رہی ہوں ۔“ خاتون نے اپنے ٹویٹ میں سٹی ٹریفک پولیس لاہور کو مینشن کرتے ہوئے کہا کہ کیا آپ اپنی صفوں میں سے یہ گند صاف کرنے کیلئے تیار ہیں یا پھر یہ آپ کی ترجیح نہیں ہے ۔“

خاتون کی جانب سے جاری کر دہ تصاویر میں دیکھا جا سکتاہے کہ موٹر سائیکل پر سوار ٹریفک وارڈن گاڑی کے اندر دیکھ رہاہے اور ساتھ میں ہاتھ بھی ہلا رہاہے جیسے اسے ویڈیو بنانے سے کوئی فرق محسوس نہیں ہورہا ۔

خاتون کا پیغام سوشل میڈیا پر آنے کے بعد سٹی ٹریفک پولیس کی جانب سے معاملے پر فوری ایکشن لیا گیا اور اہلکار کی نشاندہی کرتے ہوئے اسے معطل کر دیا ،نوٹیفکیشن خاتون صارف کے ٹویٹ کے جواب میں جاری بھی کیا ۔ ٹریفک پولیس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ

”سی ٹی او لاہور نے اس ٹریفک وارڈن کو فوری طور پر معطل کر دیا ہے اور اس کے خلاف محکمانہ کارروائی کا آغاز کیا جا رہا ہے۔پنجاب پولیس خواتین کے احترام اور تحفظ کو یقینی بناتی ہے۔ ہراسانی میں ملوث افراد کے خلاف زیرو ٹالرنس پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔“

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -