وزارت سمندر پار پاکستانیز میں بے ضابطگیوں کا انکشاف

وزارت سمندر پار پاکستانیز میں بے ضابطگیوں کا انکشاف
وزارت سمندر پار پاکستانیز میں بے ضابطگیوں کا انکشاف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سمندر پار پاکستانیز اور ترقی انسانی وسائل کی وفاقی وزارت کے حسابات میں بے قاعدگیوں اور بے ضابطگیوںکا انکشاف ہواہے ۔ قومی اسمبلی میں پیش کردہ آڈٹ رپورٹ برائے 2012-13ءکے مطابق وزارت کو 60 کروڑ 37 لاکھ 31 ہزار روپے کی بجٹ گرانٹ دی گئی۔
وزارت نے 5 کروڑ 41 لاکھ 23 ہزار روپے کی اضافی گرانٹ حاصل کرلی مگر اخراجات صرف 60 کروڑ 38 لاکھ 81 ہزار تک محدود رہے جس سے وزارت میں پولیسی سازی کا فقدان بے نقاب ہوگیا۔ آڈٹ کے مطابق وزارت متوقع اخراجات کا تخمینہ لگانے میں ناکام رہی، اضافی بجٹ کے باوجود اخراجات محدود رکھ کر قومی سرمائے کو منجمد رکھا گیا۔
آڈٹ رپورٹ میں وزارت اوورسیز پاکستانیز میں خرچ ہونے والے 27 لاکھ 40 ہزار روپے کے صوابدیدی اخراجات کے حسابات فراہم نہ کرنے پر بھی اعتراضات اٹھائے گئے ہیں۔ یہ فنڈز 2008-13ءتک وفاقی وزیر اور وزیر مملکت نے خرچ کئے مگر ریکارڈ میں ان کی رسیدیں موجود نہیں۔ انتظامیہ کی طرف سے یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ پرائیویٹ سیکرٹریوں کورسیدیں فراہم کرنے کے لئے کہ دیا گیا ہے۔ تام حتمی جواب پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی کے اجلاس میں ہی ملے گا۔

مزید :

اسلام آباد -