اقتصادی راہداری سے تجارتی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا: ظہیر بھٹہ

اقتصادی راہداری سے تجارتی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا: ظہیر بھٹہ

لاہور(کامرس رپورٹر)چیئرمین لاہور ٹاؤن شپ انڈسٹریز ایسوسی ظہیر بھٹہ ایگزیکٹو ممبر لاہور چیمبرز آف کامرس و انڈسٹریز نے پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ میں پاکستان اور چین کے مزید 11شہروں کو شامل کرنے پر اتفاق پرمسرت کا اظہار کرتے ہوئے اسے خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ اقتصادی راہداری منصوبہ میں لاہور سمیت مزید9پاکستانی شہروں خنجراب، پشاور، اسلام آباد، لاہور، ملتان ،سکھر، کوئیٹہ ،کراچی اور گوادر جبکہ چینی شہر کاشی، ٹیکس کورکن کی شمولیت سے تجارتی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا ۔اور اس منصوبہ میں ان شہروں کو شامل کرنے سے ان شہروں میں موجود صنعتیں ترقی کریں گی۔

اور ان کا تیار شدہ مال اقتصادی راہداری منصوبہ کے باعث دوسروں ملکوں میں فوری طور پر ارسال کیا جاسکے گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے خالد افضل شیخ سینئر وائس چیئرمین ،نعمان حسین وائس چیئرمین کے ساتھ ٹاؤن شپ انڈسٹریز کے صنعتکاروں کے مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ظہیر بھٹہ نے کہا کہ اقتصادی راہداری منصوبہ خطے میں اقتصادی انقلاب کی نوید ثابت ہوگا۔چین کی پاکستان کی تاریخ کی سب سے بڑی سرمایہ کاری اقتصادی راہداری منصوبے کی تکمیل سے نجی شعبے کو بہت فائدہ ہو گا اور بے روزگاری ختم ہو گی،انہوں نے کہا کہ سول اور عسکری قیادت اس منصوبے کی تکمیل کیلئے ایک صف پر ہیں،پاک چین ایک سڑک نہیں بلکہ نئے منصوبوں کا ایک پیکچ ہے۔منصوبے کی اہمیت کے پیش نظراس کی نگرانی کے لیے 35 رکنی کمیٹی بنائی گئی ہے، اس منصوبے سے صرف پاکستان کو نہیں بلکہ پورے خطے کا فائدہ ہوگا،اس منصوبے کی تکمیل سے خطے میں معاشی انقلاب آئے گا،اور تجارتی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا،اس منصوبے سے گوادر پورٹ پاکستان کی تیسری بڑی بندرگاہ کے طور ابھرے گی ۔گوادر پورٹ تکمیل سے ایشیا،افریقہ اور پورپ سے بہتر تجارتی روابط استوار ہونگے۔

مزید : کامرس