پی ٹی وی اعلیٰ ثقافتی اقدار کا حامل ادارہ ہے،پروڈیوسر شوکت چنگیزی کی باتیں

پی ٹی وی اعلیٰ ثقافتی اقدار کا حامل ادارہ ہے،پروڈیوسر شوکت چنگیزی کی باتیں

حسن عباس زیدی

پاکستان ٹیلی وژن کے قیام سے لے کر آج تک بے شمار باصلاحیت پروڈیوسرز نے قومی چینل کے لئے خدمات انجام دیں ہیں۔خاص طور پر اس پی ٹی وی کے ڈراموں نے پوری دنیا میں دھوم مچائی ۔ محمد نثار حسین،نصرت ٹھاکر،یاور حیات،راشد ڈار،قاسم جلالی،کاظم پاشااورشہزاد خلیل کا شمار ان پروڈیوسرز میں ہوتا ہے جن کی ڈائریکشن میں بنائے جانے والے ڈرامے آج بھی ناظرین کے ذہنوں پر نقش ہیں۔ پی ٹی وی لاہور مرکز سے جن وابستہ پروڈیوسرز نے بہترین کام کرکے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا ہے ان پروڈیوسرز میں ایک نام شوکت چنگیزی کا ہے انہوں نے اپنے کیرئیر کا آغاز پی ٹی وی کوئٹہ مرکز سے کیا ۔کوئٹہ مرکز سے لاتعداد بہترین پروگرام اور ڈرامے پروڈیوس کرنے کے بعد شوکت چنگیزی جب سے لاہور آنے کے بعد تسلسل کے ساتھ کامیاب پراجیکٹس پیش کررہے ہیں جشن آزادی ہو یا عید ان کی ڈائریکشن میں بنائے جانے والے طویل دورانیہ کے خصوصی کھیل ہمیشہ ناظرین کی پذیرائی حاصل کرتے ہیں ۔ان کو بہترین کام کرنے پر کئی ایوارڈ مل چکے ہیں۔ایوارڈ کسی بھی انسان کی صلاحیت کا اعتراف ہوتا ہے۔ان کے ساتھ کام کرنے والے فنکاروں کا کہنا ہے کہ انہیں شوکت چنگیزی کی ڈائریکشن میں بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے ۔وہ ان دنوں بابائے صحافت مولاناظفر علی خان کی زندگی پر ایک دستاویزی فلم بنانے میں مصروف ہیں یہ دستاویزی فلم 27نومبر کو مولاناظفر علی خان کی برسی کے موقع پر نشر کی جائے گی۔ ’’پاکستان‘‘سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے شوکت چنگیزی نے کہا کہ میں نے ہمیشہ محنت اور لگن سے اپنے ہر کام کو انجام دیا ہے جس کی وجہ سے کامیابی نے میرے قدم چومے ہیں اتنی کامیابیوں کے باوجود مین سمجھتا ہوں کہ میری منزل ابھی دور ہے۔2002سے2010 تک کوئٹہ مرکز کے لئے عید شو سمیت کئی پروگرام پروڈیوس کئے2009میں پشتو ڈرامہ اور2010 میں پشتوڈرامہ سیریل بنانے پر مجھے بہترین پروڈیوسر کے ایوارڈ سے نوازا گیا۔یہ دونوں پراجیکٹ پی تی وی کوئٹہ مرکز سے آن ائیر ہوئے تھے ۔میں اپنے کیرئیر کے دوران بہت سارے سینئر اور جونیئر فنکاروں کے ساتھ کام کرچکا ہوں جن فنکاروں نے مجھے متاثر کیا ان میں محمد قوی خان،عثمان پیرزادہ،خالد بٹ،عائشہ خان، اشرف خان،فردوس جمال،عمران بخاری اور عمران عروج خان شامل ہیں۔میں نے جن رائٹرز کے ساتھ زیادہ کام کیا ان میں اصغر ندیم سید،ڈاکٹر عطاء اللہ عالی اور یاسر پیرزادہ کے نام نمایاں ہیں۔نیب کے لئے شارٹ فلم بنانے پر مجھے پچاس ہزار روپے کا انعام ملا تھا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بابائے صحافت مولاناظفر علی خان کی دستاویزی فلم تیار کرنا میرے لئے بہت بڑے اعزاز کی بات ہے۔یہ دستاویزی فلم چند روز میں مکمل ہو جائے گی۔اس کا دورانیہ25منٹ ہوگا۔ایک سوال کے جواب میں شوکت چنگیزی نے بتایا کہ میں ربیع الاوّل کے لئے ’’رحمت العالمینؐ‘‘کے نام سے 12پروگرام بھی تیار کررہا ہوں جس میں مختلف مکاتب فکر کے علمائے کرام حضرت محمد مصطفےٰ ؐ کی حیات طیبہ کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالیں گے۔انہوں نے کہا کہمجھ سمیت پی ٹی وی کے ہر کارکن کو منیجنگ ڈائریکٹر محمد مالک سے بہت امیدیں وابستہ ہیں پی ٹی وی کی ترقی کے لئے محمد مالک کے اقدامات کی جتنی تعریف کی جائے وہ کم ہے۔سلسلہ کلام جاری رکھتے ہوئے شوکت چنگیزی نے کہا کہ پی ٹی وی لاہور مرکز کے موجودہ جنرل منیجر بشارت احمد خان پروڈیوسرز کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرتے ہیں اور اچھے کام کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں اور گاہے بگاہے اپنے تجربہ کی روشنی میں پروڈیوسرز کی رہنمائی کرتے رہتے ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ پی ٹی وی سنٹرل ایمپلائز یونین سی بی اے کے مرکزی صدر جہانگیر خان نے کارکنان کی فلاح و بہبود کے لئے جو کام کئے ہیں ان کا ذکر تاریخ میں سنہری حروف میں کیا جائے گا۔شوکت چنگیزی نے کہا کہ میں نے کبھی بھی معیار کے معاملے میں سمجھوتہ نہیں کیا ہے۔میرے ڈراموں کی خاص بات کرداروں کے مطابق فنکاروں کا انتخاب ہوتا ہے ۔آخر میں صرف اتنا کہوں گاکہ پی ٹی وی اعلیٰ ثقافتی اقدار کا حامل ادارہ ہے اورمجھے اس بات پر فکر ہے کہ میں پی ٹی وی جیسے تاریخ ساز چینل کا حصّہ ہوں۔

مزید : ایڈیشن 1