آزادی مارچ پلان بی جاری،خیبرپخٹونخوا،سندھ اور بلوچستان کی کئی شاہراہیں بلاک

آزادی مارچ پلان بی جاری،خیبرپخٹونخوا،سندھ اور بلوچستان کی کئی شاہراہیں ...

  



پشاور،کندھکوٹ،کوئٹہ،ڈیرہ مراد جمالی(مانیٹرنگ ڈیسک  این این آئی)جمعیت علماء اسلام سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں کی کال پر آزادی مارچ تحریک کے پلان بی کے تحت خیبرپختونخوا، سندھ اور بلوچستان کی شاہراہوں کو گزشتہ روز بلاک کیا گیا۔ آزادی مارچ تحریک پلان بی کے تحت آج کوئٹہ تفتان شاہراہ اور کوئٹہ چمن شاہراہ کو بند کیا جائیگا جبکہ کل کوئٹہ گوادر اور کوئٹہ کراچی شاہراہوں پر دھرنے دیے جائیں گے۔ تفصیلات کے مطابقخیبرپختونخوا کے اضلاع نوشہرہ، بنوں میں شاہراہیں   بند کردی گئیں جس کے باعث ٹریفک کی روانی متاثر ہے۔جمعیت علمائے اسلام کے کارکن نوشہرہ، حکیم آباد میں جی ٹی روڈ دونوں اطراف سے بند ہے، سڑک کی بندش سے ٹریفک کو متبادل روٹ پر منتقل کیا گیا، ملاکنڈ میں بھی پلان بی کے تحت دھرنا جاری ہے جبکہبارش کے باعث مظاہرین کے خیمے گر گئے۔بنوں میں انڈس ہائی وے پر بھی دھرنا کا تیسرا روز ہے جبکہ کندھ کوٹ میں بھی نیشنل ہائی وے پر کارکنوں نے دھرنا دیا ہوا ہے،گھوٹکی میں بھی مظاہرین کی بڑی تعداد موجود ہے۔نصیر آباد میں ربی کے مقام پر جمعیت علمائے اسلام ف اور اتحادی جماعتوں کے آزادی مارچ تحریک پلان بی کے تحت سندھ بلوچستان قومی شاہراہ پر دھرنا دیا گیا جس سے سندھ بلوچستان کا زمینی رابطہ مکمل طور پرمعطل ہوگیا۔اس موقع پر جمعیت علمائے اسلام کے صوبائی امیر و رکن قومی اسمبلی مولانا عبدالواسع، اراکین صوبائی اسمبلی اصغر علی ترین، حاجی نواز کاکڑ، صوبائی ڈپٹی جنرل سیکٹری میرنظام الدین لہڑی ضلعی امیر مولانابشیراحمدجمالی ودیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 27اکتوبر سے ہمارے پرامن دھرنے جاری ہیں جب تک حکومت کاخاتمہ نہیں ہوتا پلان بی سمیت تمام آپشنز پر عمل درآمد جاری رہے گا۔انہوں نے کہا کہ ہم مانتے ہیں عوام کو تکلیف ہے لیکن ہمیں عوام کی نااہل حکمرانوں سے جان چھڑوا رہے ہیں تاکہ غریب عوام کو تکلیف نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نیازی صاحب اپنے دھرنے میں ہمیشہ امپائرکی انگلی کی بات کرتے تھے لیکن اب امپائر کی انگلی نہیں اٹھے گی۔مولاناعبدالواسع نے کہا کہ ہماری جماعت نے انگریزوں کامقابلہ کیا ان کو بھاگنے پرمجبورکیا اسی طرح اس حکومت کو جلد بھگائیں گے کیونکہ موجودہ حکومت کی وجہ سے ملکی معیشت تباہی کے دہانے پرپہنچ گئی،نااہل حکمران جب ٹماٹراور آلو کے نرخ کنٹرول نہیں کرسکتے تو ملک کیا چلائیں گے۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے وزراء صرف جھوٹ پر جھوٹ بول رہے ہیں۔انہیں واضح پیغام دیناچاہتاہوں ہمارا مارچ شروع اب ہواہے جب تک ان کٹھ پتلیوں کو چلتا نہیں کرینگے ہمارے دھرنے غیرمعینہ مدت تک جاری رہیں گے انہوں کہا کہ پاک افواج ہمارے دلوں کی دھڑکن ہے کسی بھی وقت ضرورت پڑے ملکی دفاع کی خاطر ہم ان کے ساتھ شانہ بشانہ ہونگے۔دوسری جانب جمعیت علمائے اسلام سمیت دیگر جماعتوں کی جانب سے ژوب ڈیرہ اسماعیل خان قومی شاہراہ پر بھی دھرنا دیا گیاجو ڈپٹی کمشنر شیرانی سے مذاکرات کے بعد ختم کیا گیا۔

دھرنے

مزید : صفحہ اول