پاکستان ریلوے وسٹاٹورزم کے اشتراک سے آج سے سفاری ٹورسٹ ٹرین چلا رہا ہے

پاکستان ریلوے وسٹاٹورزم کے اشتراک سے آج سے سفاری ٹورسٹ ٹرین چلا رہا ہے

  



پشاور(سٹی رپورٹر)پاکستان کی تاریخی اور ثقافتی خوبصورتی کو پوری دنیا میں اجاگر کرنے کے لیے حکومت پاکستان اوروفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کے ویژن کے مطابق پاکستان ریلوے وسٹاٹورزم کے اشتراک سے 17نومبر سے 20نومبر 2019تک سفاری ٹورسٹ ٹرین چلارہاہے۔ ملکی سطح پر سیاحت کی اہمیت اور فروغ کو مدنظر رکھتے ہوئے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد تمام سیاحوں کو خوش آمدید کہیں گے اور سیاحوں کو گرم جوشی سے روانہ کردیاجائیگا۔سیاحت کو فروغ دینے کے لیے پاکستان ریلوے کا پہلا عملی اقدام ہے۔ اس سفاری ٹرین میں جرمنی، جاپان، اٹلی، برطانیہ اور آسٹریلیاسمیت دنیا کے نامور سیاح اور فوٹوگرافرز حصہ لیں گے۔سفاری ٹرین کو خصوصی طور پر تیار کیاگیاہے۔ خوبصورت مقامات کی فوٹوگرافی کرنے کے لیے سفاری ٹرین کو دوران سفر مختلف مقامات پر روکے جانے کا بندوبست کیاگیاہے تاکہ غیر ملکی سیاح اور فوٹو گرافر پاکستان کے قدرتی حسن کو اپنے کیمروں میں محفوظ کرکے پوری دنیا میں اُجاگر کرسکیں۔ اس اقدام سے ناصرف پاکستان ریلوے کو معقول آمدن میسر ہوگی بلکہ غیر ملکی سیاحوں کے آنے سے پاکستان کے زرمبادلہ میں اضافہ کا باعث بھی بنے گا۔ سفاری ٹرین کا دورانیہ 3/4 دن پر مشتمل ہوگا اور یہ سفاری ٹرین اپنے پہلے مرحلے میں راولپنڈی سے گولٹرہ شریف، ٹیکسلا، اٹک سٹی سے ہوتی ہوئی اٹک خورداسٹیشن تک جائیگی۔ دوسرے مرحلے میں یہ ٹرین اٹک خورد سے واپس اٹک سٹی کے راستے سے ہوتی ہوئی کنجور اور جھلار اسٹیشن تک جائیگی۔ سفاری ٹرین ایک ڈیزل انجن، ایک اکانومی کلاس کوچ، دوعدد سٹیم انجن، پانچ مال گاڑی کی بوگیوں اور دو بریک وینز پر مشتمل ہوگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر