سکھر:ٹائیفائیڈ کو کنٹرو ل کرنے  کیلئے مہم 18نومبر سے شروع ہوگی

  سکھر:ٹائیفائیڈ کو کنٹرو ل کرنے  کیلئے مہم 18نومبر سے شروع ہوگی

  



سکھر(بیو رو پورٹ) ڈپٹی کمشنر سکھر غلام مرتضیٰ شیخ نے ٹائیفائیڈ کے خلاف شروع ہونے والی مہم کا افتتاح کرنے کے بعد منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹائیفائیڈ جیسے مہلک بیماری میں روز بروز اضافہ ہورہاہے جس مثبت انداز میں کنٹرول کرنے کے لیے سندھ حکومت کی جانب سے 18 تا 30 نومبر تک 12روزہ مہم کا آغاز کیا جارہا ہے۔ اپوا اسکول سکھر میں ٹائیفائیڈ کے خلاف آگاہی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈی سی سکھر نے تمام شہریوں اور سول سوسائٹی سے اپیل کی کہ وہ دوران مہم ٹیموں کے ساتھ بھرپور تعاون کریں اور اپنے 9 ماہ تا 15 سال تک کے بچوں کو ٹائیفائیڈ جیسی مہلک بیماری سے بچاؤکے ٹیکے ضرور لگوائیں۔ ڈی سی سکھر نے سیمینار کے شرکاء پر زور دیا کہ وہ تمام افراد معاشرے میں ہر گھر کے فرد میں یہ شعور پیدا کریں کہ اپنے گھروں میں صفائی ستھرائی کا خصوصی خیال کریں اور اچھی عادت کا اپنائیں۔ ڈی سی سکھر نے اپیل کی کہ جس علاقے میں ٹائیفائیڈکے ٹیکے لگنے والی ٹیم نہ پہنچے تو اہل علاقہ اور والدین ڈی سی آفس میں قائم کنٹرول روم کے نمبر9310600 071-پر فوری اطلاع دی جائے۔ اس سے قبل ڈی ایچ او منیر احمد منگریو نے بتایا کہ یہ مہم ضلع کی 24 یونین کونسلوں میں جاری رہے گی جس کے لیے بچوں کا ہدف تین لاکھ 52 ہزار سے زائد مقرر کیا گیا ہے جبکہ مہم میں 284 ٹیمیں حصہ لیں گی جو گھر گھر جاکر 9 ماہ تا15 سال تک کے بچوں کو ٹائیفائیڈ سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے گی۔ اس موقع پر اپوا کی چیئرپرسن حجاب کھوسو،پرنسپل عابدہ میمن اور یگر نے بھی خطاب کیا۔ بعد ازاں ڈی سی سکھر کی رہنمائی میں اپوا اسکول تا پریس کلب تک آگاہی واک کی گئی۔

مزید : صفحہ آخر