ایرانی فورسز کی پاکستانی حدود میں ایف سی کی گاڑی پر فائرنگ ، صوبیدار شہید

ایرانی فورسز کی پاکستانی حدود میں ایف سی کی گاڑی پر فائرنگ ، صوبیدار شہید
ایرانی فورسز کی پاکستانی حدود میں ایف سی کی گاڑی پر فائرنگ ، صوبیدار شہید

  

کوئٹہ(مانیٹرنگ ڈیسک ) ایرانی سیکیورٹی فورسز نے سرحدی حدود کی خلاف ورزی کرتے ہوئے فرنٹیئر کور (ایف سی )کی پیٹرولنگ کرنے والی گاڑی کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں صوبیدار شہید اور 3 اہلکار زخمی ہوگئے ہیں ، علاوہ ازیں ایرانی بارڈر سیکیورٹی فورسز نے ماشکیل میں پانچ مارٹر گولے بھی فائر کیے ۔

تفصیلات کے مطابق پاک ایران سرحدی علاقے چوکاب میں ایف سی کی پیٹرولنگ پارٹی معمول کے گشت پر تھی کہ اس دوران موٹر سائیکلوں پر سوار مشتبہ شرپسند دکھائی دیئے جس پر ایف سی اہلکاروں نے ان کا تعاقب کیا ،جیسے ہی ایف سی کی پیٹرولنگ پارٹی پاک ایران بارڈر کے قریب پہنچی تو ایرانی سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں نے پاکستانی حدود میں کئی کلو میٹر اندر تک داخل ہوکر ایف سی پر بلااشتعال فائرنگ شروع کردی، ایرانی سیکیورٹی فورسز کی جانب سے فائرنگ کا سلسلہ تقریباً 6 گھنٹے تک جاری رہا جس کے نتیجے میں صوبیدار شہید اور 3 اہلکار زخمی ہوگئے جبکہ فائرنگ سے ایف سی کی گاڑی بھی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔

آئی جی ایف سی میجر جنرل محمد اعجاز شاہد نے ایرانی سیکیورٹی فورسز کی جانب سے فائرنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مستقبل میں ایران کی جانب سے کسی بھی بلاجواز اور غیر قانونی جارحیت کا بھرپور انداز میں جواب دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ خطے میں پائیدار امن کے لئے پاکستان اور ایران کے درمیان اچھے تعلقات ناگزیر ہیں اور ضرورت اس امر کی ہے کہ دونوں ممالک کی سیکیورٹی فورسز مشترکہ طریقہ کار کے تحت پاک ایران سرحد کی بہتر طور پر نگرانی کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھائیں۔

واضح رہے کہ ایران نے گزشتہ روز دھمکی دی تھی کہ اگر پاکستانی حکومت نے اپنی سرزمین کو شدت پسندوں سے محفوظ بنانے کے لیے ٹھوس کارروائی نہ کی تو ایران پاکستانی علاقے میں ان کے خلاف کارروائی کرے گا۔

دریں اثناءایران سیکیورٹی فورسز کی جانب سے ماشکیل کے علاقے میں پانچ مارٹر گولے فائر کیے گئے ۔ لیویز ذرائع کے مطابق مارٹر گولے میدانی علاقے میں گرے تاہم ان سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے ۔

مزید : کوئٹہ /اہم خبریں