مولانا فضل الرحمان کی تقاریر اور پریس کانفرنس دکھانے پر پابندی کی خبروں پر پیمرا نے وضاحت جاری کردی

مولانا فضل الرحمان کی تقاریر اور پریس کانفرنس دکھانے پر پابندی کی خبروں پر ...
مولانا فضل الرحمان کی تقاریر اور پریس کانفرنس دکھانے پر پابندی کی خبروں پر پیمرا نے وضاحت جاری کردی

  



اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے واضح کیا ہے کہ ٹی وی چینلوں پر کسی قسم کی کوئی سنسرشپ یا پابندی عائد نہیں کی گئی۔ روزنامہ جنگ کے مطابق پیمرا نے سپریم کورٹ آف پاکستان کے نافذ کردہ کوڈ آف کنڈکٹ برائے الیکٹرانک میڈیا کے تحت تمام ٹی وی چینلوں کو صرف یہ احتیاط برتنے کو کہا ہے کہ کسی بھی قسم کی براہ راست تقاریر وغیرہ جس سے مذہبی منافرت، اشتعال انگیزی اور نقص امن عامہ کا خطرہ ہو، سے اجتناب کریں کیونکہ اس طرح کی چیزوں کا نشر وٹیلی کاسٹ ہونا انتشار پیدا ہونے کا باعث بن سکتا ہے جوکہ کسی طرح ملک وقوم کے مفاد میں نہیں ہے۔ تاہم پیمرا نے کسی بھی قسم کی خبر کے ٹکرز یا نشر/ٹیلی کاسٹ کئے جانے یا ٹاک شوز وغیرہ پر کسی قسم کی ممانعت نہیں عائد کی۔ پیمرا آئین اور ملکی قوانین کے تحت میڈیا کی مکمل آزادی پر یقین رکھتا ہے اور پیمرا نے تمام ٹی وی چینلوں سے صرف اور صرف الیکٹرانک میڈیا کے کوڈ آف کنڈکٹ کی پاسداری کی درخواست کی ہے اور ٹی وی چینلوں پر کسی بھی قسم کی قدغن پابندی یا سنسرشپ عائد کئے جانے کی افواہیں سراسر غلط بے بنیاد من گھڑت اور حقائق کے منافی ہیں۔ پیمرا نے یہ بھی واضح کیا ہے کہ یہ ہدایات کسی مخصوص پارٹی یا گروپ کیلئے نہیں ہیں بلکہ پیمرا وقتاً فوقتاً اس قسم کی صورتحال میں ماضی میں بھی اپنے الیکٹرانک میڈیا کو کوڈ آف کنڈکٹ کے تحت یہی مناسب ہدایات جاری کرتا رہا ہے۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد