زندہ خاتون کو 2 مختلف ہسپتالوں نے مردہ قرار دے دیا ، اس کو دراصل کیا ہوا تھا؟ انسانی تاریخ کی انوکھی ترین بیماری

زندہ خاتون کو 2 مختلف ہسپتالوں نے مردہ قرار دے دیا ، اس کو دراصل کیا ہوا تھا؟ ...
زندہ خاتون کو 2 مختلف ہسپتالوں نے مردہ قرار دے دیا ، اس کو دراصل کیا ہوا تھا؟ انسانی تاریخ کی انوکھی ترین بیماری

  



نئی دلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارت میں ایک خاتون کو 2 مختلف ہسپتالوں کی جانب سے مردہ قرار دے دیا گیا لیکن وہ درحقیقت زندہ تھی، اس خاتون کو ’ لزارس سنڈروم‘ نامی بیماری ہے جو انسانی تاریخ میں اب تک صرف 39 لوگوں کو لاحق ہوئی ہے۔

برطانوی اخبار ڈیلی سٹار کے مطابق 45 سالہ بھارتی خاتون کو 2 مختلف ہسپتالوں نے مردہ قرار دیا لیکن درحقیقت وہ زندہ تھی، بھارت میں یہ اپنی نوعیت کا پہلا کیس ہے۔ اس خاتون سے قبل اب تک صرف 38 لوگوں میں ’ لزارس سنڈروم‘ کی تشخیص ہوئی تھی۔

خاتون کو پھیپھڑوں میں انفیکشن تھا جس کے باعث اسے سانس لینے میں دشواری کا سامنا تھا، اسے پنجاب کے دارالحکومت چندی گڑھ کے گورنمنٹ ملٹی سپیشلٹی ہسپتال میں داخل کرایا گیا جہاں ڈاکٹرز نے اسے مردہ قرار دے دیا۔3 گھنٹے بعد اہلخانہ اس کی لاش کو گھر لے جانے لگے تو انہیں اندازہ ہوا کہ خاتون زندہ ہے،جس کے بعد وہ فوری طور پر اسے گورنمنٹ میڈیکل کالج اینڈ ہسپتال چندی گڑھ لے گئے جہاں ڈاکٹرز نے اس کی جان بچانے کیلئے 2 گھنٹے تک ہنگامی علاج کیا۔

دوسرے ہسپتال کے ڈاکٹرز نے بھی خاتون کو مردہ قرار دے دیا جس کوآخری رسومات کیلئے گھر لے جایا گیا تو خاتون پھر سے زندہ ہوگئی۔ معاملہ سامنے آنے پر بھارت کے محکمہ صحت نے اس کی تحقیقات کیں تو اس میں کسی قسم کی پیشہ ورانہ بد دیانتی سامنے نہیں آئی ۔

مزید : ڈیلی بائیٹس