فرانس میں حضور ﷺ کا خاکہ کلاس میں دکھانے والے ٹیچر کو قتل کردیا گیا

فرانس میں حضور ﷺ کا خاکہ کلاس میں دکھانے والے ٹیچر کو قتل کردیا گیا
فرانس میں حضور ﷺ کا خاکہ کلاس میں دکھانے والے ٹیچر کو قتل کردیا گیا
کیپشن:    سورس:   Pxfuel

  

پیرس (ڈیلی پاکستان آن لائن) یورپی ملک فرانس میں ایک شخص نے حضور ﷺ کا خاکہ کلاس میں دکھانے والے تاریخ کے ٹیچر  کو تیز دھار آلے کے ساتھ قتل کردیا۔ بعد ازاں پولیس کی فائرنگ سے حملہ آور بھی مارا گیا۔

واقعہ پیرس کے مضافاتی علاقے کانفلینس سینٹ ہونورائن میں پیش آیا جہاں ایک شخص نے مڈل سکول کے باہر تاریخ کے استاد کو تیز دھار آلے کے ساتھ قتل کیا۔ پولیس کے مطابق انہیں سکول کے باہر ایک مشکوک شخص کی موجودگی کی اطلاع ملی تھی ، جب وہ موقع پر پہنچے تو ٹیچر کی لاش پڑی ہوئی تھی۔ پولیس نے حملہ آور کو جلد ہی ڈھونڈ نکالا اور اسے گرفتار کرنے کی کوشش کی تو اس نے آگے سے مزاحمت کی، حملہ آور کے ہاتھ میں آلہ قتل موجود تھا، اس کی جانب سے مزاحمت  پر اہلکاروں نے گولی مار کر اسے موت کے گھاٹ اتار دیا۔

فرانسیسی میڈیا کے مطابق10 روز پہلے تاریخ کے استاد نے آزادی اظہار رائے پر طلبہ کو لیکچر دینے کیلئے حضور ﷺ کے خاکے دکھانے کا فیصلہ کیا تھا۔ اس نے خاکے دکھانے سے پہلے مسلمان طلبہ کو کلاس سے باہر جانے کا کہا جس پر تنازعہ پیدا ہوگیا۔ ایک بچے کے والد نے اس استاد کے خلاف شکایت بھی جمع کرائی تھی۔ 

امریکی خبر ایجنسی اے ایف پی کے مطابق پولیس نے حملہ آور کے بارے میں زیادہ معلومات نہیں دیں تاہم اتنا بتایا ہے کہ اس کا کوئی بچہ سکول میں زیر تعلیم نہیں تھا۔  یہ ایک 18 سالہ نوجوان تھا جس کا تعلق چیچنیا سے تھا اور اس کی پیدائش روس کے دارالحکومت ماسکو میں ہوئی تھی۔

مزید :

بین الاقوامی -