دریا کی صفائی مہم کے دوران اتنے زیادہ طلبا ڈوب کر جاں بحق ہوگئے کہ آپ کو بھی دکھ ہوگا

دریا کی صفائی مہم کے دوران اتنے زیادہ طلبا ڈوب کر جاں بحق ہوگئے کہ آپ کو بھی ...
 دریا کی صفائی مہم کے دوران اتنے زیادہ طلبا ڈوب کر جاں بحق ہوگئے کہ آپ کو بھی دکھ ہوگا

  

جکارتہ (ویب ڈیسک)  انڈونیشیا کے   کے ایک دریا کی صفائی مہم کے دوران  سکول کے 13 سے 15 سال کے 11 بچے کشتی سے گرنے کی وجہ سے ڈوب کر جاں بحق ہو گئے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق  جزیرے جاوا میں اسلامک ہائی اسکول کے 150 طلبا ایک دریا کی صفائی مہم کے سلسلے میں گئے تھے۔ 

صفائی کے دوران 21 طلبا کشتی سے دریا میں گر گئے جن میں سے 10 بچوں کو زندہ نکال لیا گیا تاہم 11 بچے پھیپھڑوں میں زیادہ پانی بھر جانے کے باعث جان کی بازی ہار گئے۔ریسکیو ادارے کا کہنا ہے کہ ڈوبنے والے بچے کشتی میں ایک دوسرے کا ہاتھ مضبوطی سے تھامے بیٹھے تھے اور ایک بچے کے گرنے سے باقی بچے بھی ایک کے بعد ایک دریا میں گرتے گئے۔

دوسری جانب عینی شاہدین نے بتایا کہ بچے دریا کو عبور کرنے کی کوشش کے دوران پانی کا تیز ریلہ آنے کی وجہ سے بہہ گئے تھے اور انھوں نے حفاظتی جیکٹس بھی نہیں پہن رکھی تھیں۔انتظامیہ کا کہنا ہے کہ دریا میں نہ تو طغیانی اور نہ ہی بارش ہوئی تھی اس لیے پُرسکون دریا میں بچوں کا بہہ جانا بد قسمتی کے سوا کچھ نہیں۔ واقعے کی تحقیقات کے لیے انکوائری کمیٹی تشکیل دیدی گئی۔

واضح رہے کہ آج ہی انڈونیشیا کے جزیرے بالی میں 4.3 شدت کا زلزلہ محسوس کیا گیا ہے جس میں 3 افراد ہلاک اور 15 زخمی ہوگئے۔

مزید :

بین الاقوامی -