اوورسیز پاکستانیوں کی محبت اپنے ملک سے بے مثال اور لازوال ہے،چوہدری سرور

اوورسیز پاکستانیوں کی محبت اپنے ملک سے بے مثال اور لازوال ہے،چوہدری سرور

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لندن /لاہور( نمائندہ خصوصی )گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں کی محبت اپنے ملک سے بے مثال اور لازوال ہے۔ ملک کو جب بھی کسی قدرتی آفات یا بحران کا سامنا ہوا ہے اوورسیز پاکستانی اپنے پاکستانی بہن بھائیوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے نظر آئے ہیں۔ آج جب کہ ملک ایک نازک دور سے گزر رہا ہے ، ہمیں بے شمار مسائل کا سامنا ہے جہاں ایک طرف آئی ڈی پیز ہماری مدد کے منتظر ہیں اور دوسری طرف حالیہ بارشوں سے سیلاب نے جو تباہی مچائی ہے ہمیں اس مصیبت کی گھڑی میں اپنے سیلاب متاثرین اور آئی ڈی پیز کی دل کھول کر مدد کرنی ہے جو ہماری قومی اور انسانی ذمہ داری بھی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دورہ برطانیہ کے دوران سکاٹ لینڈ میں سیلاب زدگان کے لئے امدادی مہم کے دوران مختلف اہم شخصیات اور فلاحی تنظیموں کے عہدیداران سے ملاقات کے دوران کیا۔ گورنر پنجاب نے کہا کہ اس قدرتی آفت سے نہ صرف سینکڑوں کی تعداد میںانسانی جانوں کا ضیاع ہوا ہے بلکہ وسیع پیمانے پر کھڑی فصلوں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں نے ہر مشکل کی گھڑی میں اپنے پاکستانی بہن بھائیوں کی دل کھول کر مدد کی ہے اور اس مصیبت کی گھڑی میں بھی وہ اپنے بھائیوں کو اکیلا نہیں چھوڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ان کا یہ دورہ صرف اور صرف اپنے مصیبت زدہ پاکستانی عوام کے لئے ہے جس کے لئے وہ زیادہ سے زیادہ فنڈ ریزنگ کو یقینی بنانے کے لئے ہر ممکن اقدامات کو بروئے کار لائیں گے۔ گورنر پنجاب نے اپنے پاکستانی عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ پنجاب کا عزم ہے کہ وہ مشکل کی اس گھڑی میں سیلاب متاثرین کی امداد کے لئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھیں گے۔ گورنر پنجاب نے کہا کہ ان کے دورے کے دوران برطانیہ کے سابق وزیر اعظم گولڈن براﺅن سے بھی ان کی ملاقات متوقع ہے جنہوں پاکستان میں ایجوکیشن سیکٹر کو مزید فعال اور مو¿ثر بنانے کے ساتھ ساتھ یہاں ہر بچے کو زیور تعلیم سے آراستہ کرنے کے لئے بلین ڈالرز کی امداد دینے میں خصوصی دلچسپی لے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک مضبوط ، خوشحال اور معاشی طور پر مستحکم اسی صورت دُنیا کے نقشے پر ابھر سکتا ہے جب یہاں تعلیم کو بنیادی اور اولین ترجیح دی جائے گی۔

مزید :

صفحہ آخر -