حکومت نے ایک سال اورگزار لیا تو سٹریٹیجک انٹرسٹ پر بھی سمجھوتہ کرنا پڑے گا ، احسن اقبال نے انتہائی خطرناک بات کردی

حکومت نے ایک سال اورگزار لیا تو سٹریٹیجک انٹرسٹ پر بھی سمجھوتہ کرنا پڑے گا ، ...
حکومت نے ایک سال اورگزار لیا تو سٹریٹیجک انٹرسٹ پر بھی سمجھوتہ کرنا پڑے گا ، احسن اقبال نے انتہائی خطرناک بات کردی

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے کہاہے کہ عمران خان سے نہ کوئی این آر او ہوگا اور نہ معافی دی جائے گی، ان سے قوم کوسبز باغ دکھانے کا پورا حساب لیاجائے گا ، اگر ایک سال ایسا اور لگ گیا تو پاکستان کو اپنے اکنامک بیل آﺅٹ کے ساتھ سٹریٹیجک انٹرسٹ پر بھی سمجھوتہ کرنا پڑے گا ۔

جیونیوز کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“میں گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ حکومت مسئلہ کشمیر پر قوم کو متحد کرنے میں ناکام ہوئی ہے ، کس نے کہا تھا کہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے بعد مریم نواز کوگرفتار کرلو ؟ انہوں نے کہا کہ کیا مریم نواز کی گرفتار ی ایک ماہ کیلئے ملتوی نہیں ہوسکتی تھی؟انہوں نے کہا کہ ہم سے اب ہر بندہ یہ بات کررہاہے کہ ان سے جان کب چھڑا رہے ہیں ؟ اگر عوام خود باہر نکل آئے تو حکومت کتنی دیر رہے گی؟ اگر کسی سیاسی پارٹی نے عوام کی سرپرستی نہ کی تو پھر عوام بے قابو ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم مولانا فضل الرحمان کے ساتھ مارچ میں اس لئے شرکت کررہے ہیں کہ ہم چاہتے ہیں اس مارچ کو مذہبی رنگ نہ دے دیاجائے ۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ عمران خان سے نہ کوئی این آر او ہوگا اور نہ معافی دی جائے گی، ان سے قوم کوسبز باغ دکھانے کا پورا حساب لیاجائے گا ، اگر ایک سال ایسا اور لگ گیا تو پاکستان کو اپنے اکنامک بیل آﺅٹ پیکج کے ساتھ سٹریٹیجک انٹرسٹ پر بھی سمجھوتہ کرنا پڑے گا ۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے بھارت کے تمام اشاروں کو نظر اندا ز کیاہے ، بھارتی وزیر خا رجہ کے بیان کو اب نظر انداز نہیں کرناچاہئے جس میں اس کی جانب سے کہاگیاہے کہ جلد آزاد کشمیر کا انتظام بھارت کے پاس ہوگا ۔

مزید : قومی


loading...