پولیس شہداء کی قربانی اور بہادری اظہر من الشمس ہین، سی سی پی او 

پولیس شہداء کی قربانی اور بہادری اظہر من الشمس ہین، سی سی پی او 

  

پشاور(کرائمز رپورٹر)آئی جی خیبر پختونخواہ ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی کی ہدایت پر دہشت گردی کے دوران شہید ہونے والے پولیس شہداء کے بچوں کو محکمہ پولیس میں بطور اے ایس آئی بھرتی کر لیا گیا، سی سی پی او محمد علی گنڈا پور نے گزشتہ روز ملک سعد شہید پولیس لائن پشاور میں پولیس شہدا کے بچوں کو آرڈرز حوالہ کئے گئے، اس موقع پر ایس ایس پی آپریشن منصور امان اور ایس پی ہیڈ کوارٹرز خانخیل خان بھی موجود تھے، سی سی پی او نے بھرتی ہونے والے جوانوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پولیس شہداء کی قربانیوں اور  بہادری و شجاعت کی داستان سنہرے حروف سے لکھی جائے گی،انہوں نے نئے بھرتی ہونے والے جوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اپنے اسلاف کی طرح وہ بھی ملک و قوم کی خاطر جرائم کی روک تھام اور معاشرتی برائیوں کے خاتمہ میں کردار ادا کریں انہوں نے مزید کہا پولیس شہداء نے اپنا خون بہا کر محکمہ کے وقار اور عزت میں اضافہ کیا ہے انہوں نے توقع ظاہر کی کہ نئے تعینات ہونیوالے افسران پولیس کی نیک نامی اور عزت میں مزید اضافہ کا باعث بنیں گے تفصیلات کے مطابق سی سی پی او محمد علی گنڈا پورنے گزشتہ روز پولیس شہداء کے بچوں کو بطور اے ایس آئی بھرتی کرنے کے حکمنامے حوالہ کئے، اس موقع پر ایس ایس پی آپریشن منصور امان، ایس پی ہیڈ کوارٹرز خانخیل خان اور دیگر افسران بھی موجود تھے، سی سی پی او محمد علی گنڈا پورنے اس موقع پر کہا کہ خیبر پختونخواہ پولیس کے شہداء کی قربانیاں، بہادری اور شجاعت کی داستان سنہرے حروف سے لکھی جائے گی، انہوں نے نئے بھرتی ہونے والے اے ایس آئیز کو عوام کے جان و مال کو یقینی بنانے اور محکمہ پولیس کے عزت و وقار کو مزید بلند کرنے کے لئے کردار ادا کرنے پر زور دیا،انہوں نے مزید کہا پولیس شہداء نے اپنا خون بہا کر محکمہ کے وقار اور عزت میں اضافہ کیا ہے انہوں نے توقع ظاہر کی کہ نئے بھرتی ہونیوالے افسران پولیس بھی محکمہ کی نیک نامی اور عزت میں مزید اضافہ کا باعث بنیں گے جس پر نئے بھرتی ہونے والے جوانوں نے اپنے اجداد کے نقش قدم پر چلتے ہوئے ملک و قوم کی خاطر کسی بھی قربانی سے دریغ نہ کر نے کا عزم ظاہر کیا 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -