کامونکی انٹر چینج بنانے کیلئے دائر درخواست پر چیئرمین نیشنل ہائی وے اتھارٹی کو فیصلہ کرنے کا حکم

کامونکی انٹر چینج بنانے کیلئے دائر درخواست پر چیئرمین نیشنل ہائی وے اتھارٹی ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس شاہد کریم نے لاہور سیالکوٹ موٹر وے پر کامونکی انٹر چینج بنانے کیلئے دائر درخواست پرچیئرمین نیشنل ہائی وے اتھارٹی کو درخواست پر قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کا حکم دے دیاہے  عدالت نے یہ تحریری فیصلہ کامونکی کے رہائشی طاہر سلیم ایڈووکیٹ کی درخواست پر جاری کیاہے،درخواست میں وفاقی و صوبائی حکومت، سیکرٹری مواصلات، این ایچ اے، کمشنر گوجرانوالہ سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا تھا  درخواست گزار کا موقف ہے کہ لاہور سیالکوٹ موٹر وے کی تعمیر کے کامونکی

 اور نواحی علاقوں میں نظر انداز کیا گیا، لاہور سیالکوٹ موٹر وے پر کامونکی اور نواحی علاقوں کیلئے کوئی انٹرچینج تعمیر نہیں کیا گیا کسان کامونکی سے لاہور کی آبادی کیلئے روزانہ کی بنیاد پھل اور سبزیاں بھجواتے ہیں سیالکوٹ موٹر وے پر کامونکی انٹرچینج بناتے ہوئے تاجروں، کسانوں، طلباء، مریضوں اور مقامی لوگوں کی سہولت کو نظر انداز کیا گیا، کامونکی کے رہائشیوں نے سیالکوٹ موٹروے پر انٹرچینج بنانے کیلئے متعلقہ حکام کو درخواستیں بھی دیں مگر شنوائی نہیں ہوئی، آئین کے تحت شہریوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی حکومت کی ذمہ داری ہے سیاسی مفادات اور اثرو رسوخ کے باعث کامونکی کے رہائشیوں کی سہولت کو نظر انداز کر دیا گیا،عدالت سے استدعاہے کہ چیئرمین این ایچ اے کو سیالکوٹ موٹر وے پر کامونکی انٹرچینج تعمیر کرنے کا حکم دیا جائے۔

فیصلہ کرنے کا حکم

مزید :

صفحہ آخر -