لالہ صحرائی کی منظوم تصنیف ”غزوات رحمتہ للعالمین“ پر مقالہ شائع ہوگیا

لالہ صحرائی کی منظوم تصنیف ”غزوات رحمتہ للعالمین“ پر مقالہ شائع ہوگیا

  

لاہور( )  صدارتی ایوارڈ یافتہ نعت گو شاعر، ممتاز نثر نگار اور معروف ادیب لالہ صحرائی کی ادبی کاوشوں پر چوتھا تحقیقی مقالہ شائع ہو گیا ہے۔ مقالہ نگار عبدالجمال ناصر نے ڈاکٹر ریاض مجید کی نگرانی میں لالہ صحرائی کی صدارتی ایوارڈ یافتہ تصنیف "غزوات رحمت للعالمین " پر اپنا تحقیقی کام قلمبند کیا ہے۔ اس سے قبل ایم فل کے لیے  تین تحقیقی مقالہ جات  لالہ صحرائی کی ”نثر نگاری“ پر نازیہ تبسم، ”نعتیہ شاعری“ پر سدھیر احمد رازی اور ”حیات اور ادبی خدمات“ پرفوزیہ رانی  مکمل کرچکی ہیں۔لالہ صحرائی کا صدارتی ایوارڈ یافتہ مجموعہ ”غزوات رحمتہ اللعالمین“ منفرد اور اعلیٰ مجموعہ سخن ہے اردو ادب میں پہلی مرتبہ تمام غزوات نبویؐ کو مستند اور معتبر مورخین کی تحریروں کے مطالعہ کے بعد منظوم شکل میں پیش کیا گیا ہے۔ نصف صدی سے زائد دورانیئے میں معتبر علمی اور ادبی جرائد و رسائل میں لالہ صحرائی کے افسانے، شخصی خاکے، انشائیے اور تراجم شائع ہوچکے ہیں۔ لالہ صحرائی کے حمد و نعت پر مشتمل 15 مجموعے شائع ہو چکے ہیں۔ ”کلیات لالہ صحرائی“ میں حمد و نعت کا مجموعہ پیش کیا گیا ہے۔ ”نگارشات لالہ صحرائی“ میں نثری تحریریں اور ”منزل سے قریب“ میں انگریزی کلاسیکل ادب کے تراجم شائع کئے گئے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -