دائرہ دین پناہ: 17 سالہ لڑکی سے بداخلاقی  مقدمہ درج‘ جاگیردار کا صلح کیلئے دباؤ

 دائرہ دین پناہ: 17 سالہ لڑکی سے بداخلاقی  مقدمہ درج‘ جاگیردار کا صلح کیلئے ...

  

مظفرگڑھ(نامہ نگار)مظفرگڑھ کے موضع کالرو میں ایک اور لڑکی درندگی کا شکار ہوگئی،تفصیل کے مطابق مظفرگڑھ کے (بقیہ نمبر52صفحہ 7پر)

نواحی علاقہ دائرہ دین پناہ کے موضع کالرو پہاڑپور کے رہائشی  مزدورعظیم بخش کی سترہ سالہ لڑکی (ط) کو مقامی جاگیر دار غلام مرتضی کالرو کے قریبی رشتہ دار محمد نواز،شمس،سراج اقوام کالرو نے اسلحہ کے زور پر چند ماہ قبل کھیت میں بداخلاقی کا نشانہ بنا ڈالا بعد ازاں بلیک میل کرتے ھوئے وقفہ وقفہ سے اجتماعی بداخلاقی کے علاوہ انفرادی طور پر بھی بداخلاقی کا نشانہ بناتے رھے قتل کئے جانے کی دھمکیوں کے باعث متاثرہ لڑکی نے چپ اختیارکیے رکھی۔سات ماہ کی حاملہ ہونے پر لڑکی نے والدین کو آگاہ کیا پولیس تھانہ دائرہ دین پناہ نے والد کی درخواست پر  مقدمہ تو درج کر لیا ھے مگر مقامی جاگیر دار ملزمان کی گرفتاری میں رکاوٹ بن گیا اور متاثرہ خاندان پر صلح کے لیے دباؤ ڈالنے لگا۔جاگیر دار غلام مرتضیٰ کالرو نے اپنے دوستوں کریم بخش کالرو،سجاد کالرو کے ہمراہ پنچائیت بلا لی جس میں 30کے قریب افراد شریک ہوئے اور3لاکھ کے عوض مقدمہ کے اخراج کے علاوہ صلح کے لیے بھی دباؤ ڈالنا شروع کردیا،جاگیردار کے دباو کے خوف سے متاثرہ خاندان لڑکی سمیت گھر چھوڑ کر دائرہ دین پناہ کے موضع ہنجرائی چاہ ماچھی والا اپنے ماموں فقیرمحمد کے ہاں منتقل ھو گیا ھے متاثرہ لڑکی نے اپنے ماموں،بھائی،عزیزواقارب کے ہمراہ پریس کلب دائرہ دین پناہ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پہلی بار چند ماہ قبل اسلحہ کے زور پر شمس کالرو نے کھیت میں بداخلاقی کانشانہ بنایا تھا بعدازاں بلیک میل کرتے ہوئے نواز،شمس اور سراج کبھی اجتماعی اور کبھی انفرادی طور پر بداخلاقی کا نشانہ بناتے رہے متاثرہ خاندان کا کہنا ہے کہ اب بھی صلح کے لیے دباؤ ہے اور جان کو بھی خطرہ لاحق ہے متاثرہ خاندان نے احتجاج کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب،کمشنر ڈیرہ غازیخان،آر پی او ڈیرہ غازیخاں سے فوری نوٹس لینے اور متاثرہ خاندان کو انصاف دلانے کا مطالبہ کیا ہے۔

دباؤ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -