زرعی ایمرجنسی پروگرام: مختلف پراجیکٹس پر عملدرآمد تیز کرنیکا حکم 

زرعی ایمرجنسی پروگرام: مختلف پراجیکٹس پر عملدرآمد تیز کرنیکا حکم 

  

ملتان (سپیشل رپورٹر) وزیر زراعت پنجاب حسین جہانیاں گردیزی نے ہدایت کی ہے کہ پنجاب میں ”ہائی ویلیو کراپس“ کی پیداوار اور ایکسپورٹ میں اضافے کے لیے ہر ممکن وسائل بروئے کار لائے جائیں۔ وہ پنجاب میں وزیر زراعت کی ذمہ داریاں (بقیہ نمبر32صفحہ 10پر)

سنبھالنے کے بعد لاہور میں محکمہ زراعت پنجاب کے اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ اجلاس میں واصف خورشید سیکرٹری زراعت پنجاب، وقار حسین اسپیشل سیکرٹری زرعی مارکیٹنگ، ڈائریکٹر جنرل زراعت (ریسرچ)، ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع /پیسٹ وارننگ)، ڈائریکٹر جنرل زراعت (اصلاح آبپاشی)، ڈائریکٹر جنرل زراعت (فیلڈ)، ڈائریکٹر زرعی اطلاعات پنجاب، ڈائریکٹر کراپ رپورٹنگ ودیگر سینئر افسران موجود تھے۔ سیکرٹری زراعت پنجاب واصف خورشید نے اجلاس میں وزیر زراعت پنجاب کوترقیاتی منصوبوں کی پراگریس، سبسڈی کی فراہمی، جعلی زرعی ادویات و کھادوں کے خلاف مہم اور مشینی زراعت کے فروغ کے لیے اقدامات کے متعلق بریف کیا۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2020-21 میں 7 ارب 75 کروڑ روپے کی لاگت سے 5 نئے اور 39 جاری ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل سے اہم فصلوں کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ممکن ہو گا۔ بارانی علاقوں میں زیتون اور انگور کے زیر کاشت رقبے میں اضافہ سے کاشتکاروں کا معیار زندگی بہتر ہو گا۔ اس کے علاوہ وزیر اعظم کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت 300 ارب روپے کے مختلف ترقیاتی منصوبوں پر بھی عمل درآمد جاری ہے جس سے گندم کی پیداوار میں 7 من فی ایکڑ، دھان کی باسمتی اور موٹی اقسام کی پیداوار میں بالترتیب 10 من اور 20 من فی ایکڑ کے اضافہ کے علاوہ گنے کی پیداوار میں 200 من فی ایکڑ کا اضافہ ہو گا۔ سیکرٹری زراعت نے مزید کہا کہ کراپ انشورنس سکیم کے ذریعے ناگہانی آفات کی صورت میں 98 کروڑ روپے کی رقم سے 5 لاکھ 39 ہزار سے زائد کاشتکاروں کے نقصان کاازالہ کیا گیا ہے جبکہ گذشتہ دو سالوں میں ای کریڈٹ سکیم کے تحت رجسٹرڈ کاشتکاروں کو بلا سود زرعی قرضہ کی فراہمی کے لیے 25 ارب روپے کی رقم تقسیم کی جاچکی ہے۔ وزیر زراعت پنجاب نے دستیاب پانی کے باکفایت اور بہتر استعمال کی ضرورت پر زور دیا اور ”مارکیٹنگ کواپریٹوز“ کی طرز پر اہداف کے حصول میں پیش رفت پر زور دیا۔ وزیر زراعت پنجاب نے وزیر اعظم کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت جاری منصوبوں پر عمل درآمد تیز کرنے اور اہداف کی تکمیل کی ہدایت کی تاکہ کاشتکاروں کی پیداواری لاگت میں کمی اور آمدن میں اضافہ یقینی بنایا جاسکے۔ وزیر زراعت پنجاب نے زمین کی زرخیزی میں کمی، موسمیاتی تبدیلیوں، معیاری بیج کی تیاری اور کپاس و دالوں کی پیداوار میں کمی کے مسائل کو حل کرنے کے لیے پلان پیش کرنے کی ہدایت بھی کی۔ 

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -