متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر پولیس کا قبضہ، عدالت نے آئی جی کو طلب کرلیا

متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر پولیس کا قبضہ، عدالت نے آئی جی کو طلب کرلیا
متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر پولیس کا قبضہ، عدالت نے آئی جی کو طلب کرلیا
کیپشن:    سورس:   creative commons license

  

لاہور (ویب ڈیسک)لاہور ہائیکورٹ نے متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر پولیس کے قبضہ کے خلاف درخواست پر آئی جی پولیس کو بلالیا ہے. عدالت نے ریمارکس دیئے کہ کیا پولیس اس ملک میں قبضہ گروپ بن گیا ؟ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس قاسم خان نے متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر قبضہ کے معاملے پر سماعت کی۔

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے ریمارکس دیئے کہ کہ پہلے پولیس اراضی کے بدلے اپنی اراضی بورڈ کو سرنڈر کی اب اسی پر اراضی پر قبضہ کیا ہوا ہے ، اگر پولیس قبضہ گروپ بن جائے گی تو موٹر وے جیسے واقعات ہوتے رہیں گے۔ اگر سوسائٹی کو زندہ رکھنا ہے تو بڑے افسروں کو معاف کرنا چھوڑ دیں۔ درخواست گزار نے بتایا کہ متروکہ وقف املاک بورڈ کی 72کینال 6مرلہ اراضی پر ایلیٹ ٹریننگ سنٹر بنایا گیا۔

متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی کے بدلے میں محکمہ پولیس نے 72کینال اراضی دی لیکن اب پر قبضہ ریلیز نہیں کیا جا رہا۔ چیف جسٹس قاسم خان نے ڈی آئی جی ایلیٹ فورس کو متروک وقف املاک بورڈ کی اراضی پر قبضہ سے روک دیا۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -