مسلم لیگ ن امارات کے صدر کی طرف سے دبئی اور شارجہ کے عہدیداران کو اظہار وجوہ کے نوٹس جاری

مسلم لیگ ن امارات کے صدر کی طرف سے دبئی اور شارجہ کے عہدیداران کو اظہار وجوہ ...
مسلم لیگ ن امارات کے صدر کی طرف سے دبئی اور شارجہ کے عہدیداران کو اظہار وجوہ کے نوٹس جاری

  

دبئی (طاہر منیر طاہر) پاکستان مسلم لیگ ن متحدہ عرب امارات کے صدر غلام مصطفی مغل اور جنرل سیکرٹری چودھری ظفر اقبال نے واٹس ایپ کے ذریعے پی ایم ایل این دبئی کے جنرل سیکرٹری عامر سہیل گھمن، پی ایم ایل این شارجہ کے جنرل سیکرٹری عرفان اقبال طور اور پی ایم ایل این شارجہ کے سینئر نائب صدر چودھری راشد فاروق کو بذریعہ واٹس ایپ اظہار وجوع کے نوٹس جاری کئے گئے ہیں جس میں کہا گیا ہے کہ آپ متذکرہ تینوں عہدیداران کی سرگرمیاں پارٹی پالیسی سے مطابقت نہیں رکھتیں لہذا آپ تینوں عہدیداران پی ایم ایل این یو اے ای کے صدر غلام مصطفی مغل کے سامنے پیش ہوکر اپنے معاملات کی صفائی پیش کریں۔

واٹس ایپ پر موصول ہونے والے نوٹسز پر بات کرتے ہوئے عرفان اقبال طور، عامر سہیل گھمن اور چودھری راشد فاروق نے کہا کہ واٹس ایپ کے ذریعے ان ہوائی نوٹسز کی کوئی اہمیت نہیں ہے کیونکہ اظہار وجود کے نوٹس میں کوئی خاص وجہ بیان نہیں کی گئی۔ مسلم لیگ ن کے لوگو والا آفیشل لیٹر پیڈ استعمال نہیں کیا گیا، نوٹس جاری کرنے والے کے دستخط اور مہر بھی موجود نہیں ہے اور نہ ہی اپنے معاملات کی صفائی پیش کرنے کے لیے کوئی جگہ بتائی گ ئی ہے کیونکہ پوری یو اے ای میں پاکستان مسلم لیگ ن کا کوئی باقاعدہ دفتر ہی موجود نہیں ہے اور نہ ہی یہاں کے قانون کے مطابق کسی سیاسی پارٹی کا دفتر بن سکتا ہے۔ اظہار وجوہ کا نوٹس پانے والے متذکرہ تینوں عہدیداران نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن یو اے ای میں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے اور صدر غلام مصطفی مغل تمام ووٹروں اور عہدیداروں کو ایک پلیٹ فارم پر متحد کرنے میں ناکام رہے ہیں جس کا نقصان مسلم لیگ ن کوپہنچ رہا ہے۔ اگر غلام مصطفی مغل پی ایم ایل این کو متحد رکھنا چاہتے ہیں تو انہیں چاہیے کہ وہ کسی ایک خاص گروہ کو ساتھ لے کر چلنے کی بجائے سب کو ساتھ لے کر چلیں۔ اس سلسلہ میں جب پی ایم ایل این کے صدر غلام مصطفی مغل سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ میر امقصد یہ تھا کہ عامر سہیل گھمن اور عرفان اقبال طور مل کر یونٹوں کے چیئرمین کا انتخاب کریں۔ انہوں نے کہا کہ زیادہ سے زیادہ کارکنوں کو عزت دینے کے لیے ہر یونٹ میں چیئرمین مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مزید :

عرب دنیا -تارکین پاکستان -