ٹرانس افغان ریلوے منصوبے کی جلد تکمیل کیلئے پاکستان ہرممکن تعاون کرے گا، وزیراعظم عمران خان کی ازبک صدر سے ملاقات

ٹرانس افغان ریلوے منصوبے کی جلد تکمیل کیلئے پاکستان ہرممکن تعاون کرے گا، ...
ٹرانس افغان ریلوے منصوبے کی جلد تکمیل کیلئے پاکستان ہرممکن تعاون کرے گا، وزیراعظم عمران خان کی ازبک صدر سے ملاقات

  

دوشنبے(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ٹرانس افغان ریلوے منصوبے کی جلد تکمیل کیلئے پاکستان ہرممکن تعاون کرے گا،اس منصوبےکی تکمیل سے وسط ایشیائی ممالک کو گوادر اور کراچی کی بندرگاہوں کے ذریعے دنیا کے ساتھ موثر طریقے سے جوڑنے میں مدد ملے گی۔

سرکاری خبررساں ادارے کے مطابق  وزیراعظم عمران خان نے شھنگائی تعاون تنظیم (ایس سی او) کے سربراہ اجلاس کے موقع پر دوشنبے میں ازبکستان کے صدر شوکت مرزا یوف سے ملاقات کی، ملاقات میں پاکستان اور ازبکستان کے باہمی تعلقات اور علاقائی اور عالمی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر دوطرفہ تعاون، تجارت اور اقتصادی تعلقات و علاقائی رابطوں پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیراعظم عمران خان نے ازبکستان، پاکستان ٹرانزٹ ٹریڈ معاہدے (یو پی ٹی ٹی اے) کو عملی جامعہ پہنانے، دفاعی اور سیکورٹی تعاون بڑھانے، تعلیم، سیاحت، ثقافت اور دیگر شعبوں میں تعاون کو مزید بڑھانے پر روشنی ڈالی۔ وزیراعظم نے ترجیحی تجارتی معاہدے پی ٹی اے کو جلد حتمی شکل دینے کی اہمیت پر زور دیا۔ وزیراعظم نے اس موقع پر ٹرانس افغان ریلوے منصوبے کیلئے پاکستان کے مکمل تعاون کا اعادہ کرتے ہوئے اس کی جلد تکمیل کیلے ہرممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

وزیراعظم نے کہا کہ یہ منصوبہ مکمل ہونے پر وسط ایشیائی ممالک کو گوادر اور کراچی کی بندرگاہوں کے ذریعے دنیا کے ساتھ موثر طریقے سے جوڑ دے گا۔ افغانستان کی صورتحال پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے پرامن، مستحکم اور خوشحال افغانستان کیلئے پاکستان کی کوششوں پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے ایک مربوط نقطہ نظر کیلئے افغانستان کے قریبی ہمسایہ ممالک کی شمولیت کیلئے پاکستان کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کی حمایت پر ازبک صدر کا شکریہ ادا کیا۔

وزیراعظم نے کہا کہ افغانستان میں انسانی بحران اور معاشی صورتحال سے نمٹنے کیلئے عالمی برادری کو افغانستان کے ساتھ مثبت بات چیت کرنی چاہئے۔دونوں رہنماؤں نے اس عمل کو آگے بڑھانے کیلئے قریبی مشاورت جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔وزیراعظم نے ازبکستان کے صدر کو دورہ پاکستان کی دعوت د

مزید :

قومی -