امریکہ اور برطانیہ نے ایسے ملک کو جوہری آبدوز ٹیکنالوجی دینے کا فیصلہ کر لیا کہ چین بھی میدان میں آ گیا، واضح اعلان کر دیا، یہ ملک بھارت نہیں بلکہ۔۔

امریکہ اور برطانیہ نے ایسے ملک کو جوہری آبدوز ٹیکنالوجی دینے کا فیصلہ کر ...
امریکہ اور برطانیہ نے ایسے ملک کو جوہری آبدوز ٹیکنالوجی دینے کا فیصلہ کر لیا کہ چین بھی میدان میں آ گیا، واضح اعلان کر دیا، یہ ملک بھارت نہیں بلکہ۔۔
سورس: Pixabay.com (creative commons license)

  

بیجنگ (ویب ڈیسک) امریکا اور  برطانیہ کی جانب سے آسٹریلیا کو جوہری آبدوز کی ٹیکنالوجی دینے کے معاہدے کی چین نے شدید مذمت کی ہے۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق چین کا کہناہے کہ یہ معاہدہ علاقائی امن واستحکام کیلئےسنگین خطرہ ہے،اس سے اسلحہ کی دوڑ میں اضافہ ہوگا۔ترجمان چینی وزارت خارجہ کا پریس بریفنگ میں کہنا تھا کہ امریکا،برطانیہ ایٹمی برآمدات کو جیوپولیٹیکل گیمز کے آلےکےطورپراستعمال کرتے ہیں، آسٹریلیاکو جوہری آبدوز  کی ٹیکنالوجی برآمدکرنا، امریکا اور برطانیہ کے دوہرے معیار کا عکاس ہے اور انتہائی غیر ذمہ دارانہ رویہ ہے۔چینی ترجمان کا کہنا تھا کہ اس معاہدے نےجوہری عدم پھیلاؤ کے وعدوں کی پاسداری میں آسٹریلیا کے اخلاص پر سوال اٹھادیےہیں۔

خیال رہے کہ امریکا، برطانیہ اورآسٹریلیا نے بحر ہند اور بحرالکاہل کے پانیوں میں چین کے  بڑھتے اثر و رسوخ کا مقابلہ کرنے کے لیے نیا سکیورٹی اتحاد بنا لیا ہے۔

تینوں ملکوں کے درمیان ہونے والے معاہدے کے تحت امریکا اوربرطانیہ ایٹمی توانائی سے چلنےوالی آبدوزیں بنانےمیں آسٹریلیا کی مدد کریں گے، تینوں ممالک نے علاقے میں دیرپا امن یقینی بنانے کے عزم کا اظہارکیاہے۔دوسری جانب فرانس نے بھی آسٹریلیا کی جانب سے برطانیہ اور امریکا سے معاہدے کو ’پیٹھ میں چھرا گھونپنے‘ کے مترادف قرار دیا ہے۔فرانس کا کہنا ہے کہ آسٹریلیا نے پہلے ہم سے جوہری آبدوزوں کا معاہدہ کیا تھا لیکن اچانک امریکا اور برطانیہ کے پاس چلا گیا۔فرانسیسی وزیر خارجہ نے کہا کہ آسٹریلیا کو وضاحت دینی ہوگی کہ وہ اس معاہدے سے کیسے نکلے گا، اتحادیوں کا آپس میں یہ رویہ نہیں ہونا چاہیے۔

مزید :

بین الاقوامی -