حکومت نے نان فائلرز کے خلاف گھیرا تنگ کردیا ، نیب کو ایسا اختیار دے دیا کہ بڑے بڑوں کی چیخیں نکل جائیں 

حکومت نے نان فائلرز کے خلاف گھیرا تنگ کردیا ، نیب کو ایسا اختیار دے دیا کہ بڑے ...
حکومت نے نان فائلرز کے خلاف گھیرا تنگ کردیا ، نیب کو ایسا اختیار دے دیا کہ بڑے بڑوں کی چیخیں نکل جائیں 

  

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)حکومت نے نان فائلرز کے خلاف گھیرا مزید تنگ کردیا،قومی احتساب بیورو( نیب) کو 20 سال سے پرانےبندمقدمات دوبارہ کھولنے کا اختیار بھی مل گیا جبکہ  ڈاکٹراشفاق احمد کا کہنا ہے کہ ہم نے آئل اینڈ گھی اور سٹیل سیکٹر کو ٹیکس میں ریلیف دیا ہے،اب ہم روایتی کی بجائے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال اور کریک ڈاؤن کےذریعے فائلر اور نان فائلر کو جانچیں گے ۔

نجی ٹی وی کےپروگرام میں گفتگو کرتےہوئےفیڈرل بورڈ آف ریونیو( ایف بی آر)کےچیئرمین ڈاکٹراشفاق احمد نےکہا کہ نئے جاری ہونے والے قانون کے تین اہم پہلو ہیں ،سب سے پہلے یہ کہ ملک کے اندر اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا تھا ،اس میں تین سیکٹرز جو  زیادہ اہم تھے اُنہیں ہم نے ٹیکس ریلیف دیا ہے،پہلا آئل جو ہر گھر میں استعمال ہوتا ہےاوراس کی قیمتیں بہت اوپر چلی گئی تھیں ،اس کے لئے ہم نے اس میں کمی کی ہے،وزیراعظم کے پراجیکٹ" نیاپاکستان سکیم" سے سٹیل کی قیمتیں اوپر گئی ہیں،اس میں بھی ہم نے تھوڑا سا ریلیف دیا ہےتاکہ قیمتوں میں استحکام لایا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے فائلر اور نان فائلر کے خؒاف کریک ڈاؤن کرنے کا فیصلہ کیا ہے ،اب ایف بی آر انتظامیہ مینول طریقے سے ٹیکس اکٹھا کرنے کی بجائے ٹیکنالوجی کی طرف بڑھ رہے ہیں ،ہم لاء کی انفورسمنٹ کی طرف جائیں گے،نان فائلرز اس ملک کا بہت بڑا مسئلہ ہے،ہمارے پاس 15 ملین لوگوں کا ڈیٹا ہے لیکن وہ ریٹرن فائل نہیں کرتے ،یہ صاحب ثروت لوگ ہیں لیکن جب ٹیکس کا وقت آتا ہے تو وہ فائل ریٹرن نہیں کرتے،اگر وہ ریٹرن فائل کرتے بھی ہیں تو اپنا ٹیکس چھپا جاتے ہیں ،ہم ایسے لوگوں کو پکڑنے کا جو روایتی طریقہ ہے اسی طریقے سے ہم کوشش کرتے رہے ہیں لیکن ہمیں اس میں کامیابی نہیں ملی ،اس لئے اب ہم ٹیکنالوجی کے استعمال سے ان کا پیچھا کریں گے اور مجھے یقین ہے کہ اس سے ہمیں خاطر خواہ فائدہ ہو گا اور ہم نان فائلر اور ٹیکس چھپانے والوں سے ٹیکس حاصل کرنے میں کامیاب ہوں گے ۔ 

دوسری طرف ٹیکس چوروں کو پکڑنے کےلیےصدرمملکت کی جانب سےجاری ہونے والے آرڈیننس کے مطابق نیب اور نادرا کو ٹیکس دہندگان کی تفصیلات تک رسائی مل گئی، جو ٹیکس سے متعلق غلط معلومات دے گا اسے کم از کم 5 لاکھ روپے جرمانہ اور ایک سال سزا ہوگی، ایف بی آر نان فائلر کے ٹیلی فون اور بجلی کے کنکشن منقطع کر سکے گا۔نان فائلر کو بینکنگ کی سہولت سے بھی محروم کیا جاسکے گا،ٹیکس چوروں کو پکڑنے کےلیے نیا آرڈیننس جاری کردیا گیا۔آرڈی ننس سے پارلیمنٹرین اور سرکاری افسران کے ٹیکس کی تفصیلات ظاہر کرنے کا استثنیٰ ختم کردیا گیا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -