آئیے مسکرائیں 

آئیے مسکرائیں 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

٭کرائے دار(مالک مکان سے):”میں اس ماہ کرایہ ادا نہیں کر سکوں گا۔“ مالک مکان:آپ نے پچھلے ماہ بھی یہی کہا تھا۔ کرائے دار:جناب!انسان کی زبان ایک ہونی چاہیے اور میں اپنے زبان پر قائم ہوں۔
٭ساجد: جس دن میری بیوی واپس گھر آئی میرے گھر میں چوری ہو گئی۔ واجد: کسی نے سچ ہی کہا ہے مصیبت اکیلی نہیں آتی۔
٭استاد شاگرد سے: ”وہ گیا اور ایسا گیا کہ بس گیا ہی گیا“ کو انگریزی میں ترجمہ کرو۔ شاگرد: He Went اور ایسا Went کہ بس Went ہی Went۔
٭ڈاکٹر مریض کے معائنے کے لیے اس کے گھر پہنچا تو اس نے دیکھا کہ بچوں کے شوروغل کی وجہ سے کمرے میں ہنگامہ ہو رہا ہے۔ ڈاکٹر نے یہ صورتِ ِحال دیکھی تو مریض سے بولا۔ محترم! آپ کو مکمل آرام کی ضرورت ہے میری رائے یہ ہے کہ آپ کل سے اپنا دفتر جوائن کر لیں۔
٭ایک صاحب کے گھر میں چور گھس آیا۔ ان صاحب نے بہت ہمت اور ہوشیاری سے کام لے کر چور کی کنپٹی پر پستول رکھ کر اس کے ہاتھ اوپر کرادیئے اور اس کا منہ دیوار کی طرف کر دیا۔ ابھی وہ سوچ ہی رہے تھے کہ اب کیا کیا جائے کہ ان کا بیٹا پانی کا ایک گلاس لے کر آیا تو بولا۔ ”ابو! پستول میں پانی بھر لیں یہ پانی کے بغیر نہیں چلتا“۔

مزید :

ایڈیشن 1 -