ملک کی ترقی کیلئے اسٹیبلشمنٹ، عدلیہ اور الیکشن کمیشن غیر جانبدار رہیں: سراج الحق

  ملک کی ترقی کیلئے اسٹیبلشمنٹ، عدلیہ اور الیکشن کمیشن غیر جانبدار رہیں: ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


       لاہور(این این آئی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک میں کمزور جمہوریت کی وجہ اسٹیبلشمنٹ کی ڈائریکٹ، ان ڈائریکٹ مداخلت ہے۔ پی ٹی آئی اور پی ڈی ایم اسٹیبلشمنٹ کی سپورٹ کے بغیر ایک ہفتہ بھی نہیں چل سکتیں، دونوں اطراف کی لڑائی ملک کی ترقی کے لیے نہیں، اسٹیبلشمنٹ سے دودھ کی بوتل لینے کیلئے ہے، جس سے بوتل چھن جائے رونا شروع کر دیتا ہے، سات دہائیوں سے یہی کھیل چل رہا ہے۔ پی ٹی آئی نے خود اعتراف کیا کہ وہ اسٹیبلشمنٹ کی سپورٹ سے حکومت میں آئی، پی ڈی ایم کی حالیہ حکومت بھی اسی طرح بنی۔ سیاسی جماعتیں حکومت میں آ کر مصنوعی آکسیجن پر اکتفا کرتی ہیں۔ جماعت اسلامی کی تجویز ہے کہ اسٹیبلشمنٹ، عدلیہ اور الیکشن کمیشن غیر جانبدار رہیں، سیاسی جماعتیں بھی قومی اداروں کو سیاست میں نہ گھسیٹیں۔ وہ تیمرگرہ دیرپائن میں پریس کانفرنس کر رہے تھے۔ اس موقع پر سابق ایم این اے صاحبزادہ یعقوب اور امیر ضلع دیرپائن اعزاز الملک افکار بھی موجود تھے۔سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی کی تجویز ہے کہ جس طرح سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کی تعیناتی ایک خودکار نظام کے تحت ہوتی ہے اسی طرح آرمی چیف کی تقرری کے لیے نظام وضع کیا جائے۔ دفاعی ادارے کے سربراہ کی تقرری کے لیے وزیراعظم کے صوابدیدی اختیارات ختم ہونے چاہییں۔ اطلاعات کے مطابق خیبر میں ہزاروں لوگ گھر بار چھوڑ رہے ہیں، کہا جا رہا ہے کہ علاقے کے ایم این ایز، ایم پی ایز بھی فیملی سمیت پشاور منتقل ہو چکے ہیں۔ ایسا لگتا ہے کہ خیبرپختونخوا حکومت امن قائم کرنے میں ناکام ہو گئی۔ انھوں نے کہا کہ مرکزی و صوبائی حکومت کی اولین ذمہ داری ہے کہ صوبہ میں امن قائم کرے،اگر حکمرانوں سے ایسا نہیں ہو سکتا تو استعفیٰ دے کر گھر چلے جائیں۔سرکاری انتظامیہ بھی الخدمت سے ڈیٹا لے رہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ متاثرین کی بحالی تک امدادی سرگرمیاں بھرپور طریقے سے جاری رہیں گی، قوم بڑھ چڑھ کر عطیات دے۔ 
سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -