میونسپل ایمپلائز کا دھرنا کامیاب،سات دنوں میں فیصلہ

میونسپل ایمپلائز کا دھرنا کامیاب،سات دنوں میں فیصلہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


بہاولپور(ڈسٹرکٹ بیورو) میونسپل ایمپلائزکا دھرنا کامیاب  ہوگیا حکومت نے 7 دن کا وقت مانگ لیا، تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت نے میونسپل ایمپلائز کو 15 فیصد ڈسپیرٹی الاؤنس نہ دیا تھا جس کے حصول کیلئے آ ل پاکستان میونسپل ایمپلائز فیڈریشن، اور میونسپل(بقیہ نمبر4صفحہ6پر)
 کارپوریشن کی دیگر تین ورکرز تنظیموں نے مشترکہ طور پر سول سیکریٹریٹ کے سامنے دھرنا دیا تھا۔دھرنے کی قیادت مرکزی صدر خالد علوی،مرکزی جنرل سیکریٹری سیدساجد حسین بخاری ملک  محمد ریاض شیرِ بھاولپور اور تمام صدور آل پاکستان میونسپل ایمپلائزآل پاکستان میونسپل ایمپلائز فیڈریشن پاکستان اور ساتھی کر رہے تھے۔ ملک ریاض و دیگر قائدین نے اعلان کیا تھا کہ اپنے مقصد کے حصول تک یہ دھرنا جاری رہے گا۔ اس حوالہ سے حکومت سے ہونے والے پہلے مذاکرات میں حکومتی ٹیم نے مطالبہ ماننے سے انکار کر دیا، جس کے بعد ملازمین نے حکومت کیخلاف شدید نعرہ بازی کی۔بعد ازاں حکومتی وفد نے پی ٹی آئی رہنما میاں اسلم اقبال کی قیادت میں ایک وفد بھیجا۔ وزیر اعلیٰ پرویز الہٰی کی طرف سے بھیجے گئے وفد جس کی قیادت میاں اسلم کر رہے تھے سے رات گئے مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں۔ انچارج میاں اسلم اقبال نے سیکرٹری بلدیات، سیکریٹری فنانس سے ہمارے مطالبات ڈسکس کر کے یہ وعدہ کیا ہے کہ دو سے تین دن  کے اندر کیبنٹ سے منظورہ کروا کر بلدیاتی ملازمین کو ڈسپیرٹی الاؤنس کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا جائیگا۔ ملک ریاض نے کہا کہ مرکزی قیادت خالد علوی،ساجد حسین بخاری اور دیگر میونسپل تنظیموں کے رہنماؤں نے میونسپل ملازمین کے حقوق کے حصول کے جس یکجہتی کا مظاہرہ کیا قابل ستائش ہے۔ انہوں نے کہا کہ میونسپل کارپوریشن بہاولپور کے اسلم بھٹی،سلمان شاہ،علی اکبر کامران، مجید عباسی، شہزاد شاہ، انعام الحق،،شاید عثمانی،عدنان قریشی، تنویر،عامر عباسی،طارق بھٹی،ملک سلیم شہزادہ، اور دیگر ساتھیوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں جو ملازمین کے حقوق کے حصول کی جدوجہد میں سیسہ پلائی دیوار ثابت ہوئے، انعام الحق نے اس حوالہ سے کہا کہ ملازمین کے حقوق کے حصول کی جدوجہد میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کیا جائیگا۔ حکومتی وفد نے میونسپل ایمپلائز کے مسائل کے حل کیلئے جو وقت لیا ہے، امید ہے اس پر پورا اترے گی۔ اگر حکومتی وفد نے اپنے عہد کی پاسداری نہ کی تو ہو سکتا ہے ملازمین اپنے حقوق کے حصول کیلئے کسی قانون کی پاسداری نہ کریں۔ اسلم بھٹی نے کہا کہ ایک صوبہ میں دو مختلف قانون برداشت نہیں کئے جائیں گے۔