آٹے کا بحران، قیمت میں اضافہ، 135روپے کلو تک پہنچ گیا، دکانداروں اور ڈیلرز نے ذخیرہ اندوزی شرو ع کر دی

آٹے کا بحران، قیمت میں اضافہ، 135روپے کلو تک پہنچ گیا، دکانداروں اور ڈیلرز نے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


        کراچی،لاہور،پشاور(،جنرل رپورٹر،نمائندہ خصوصی، لیڈی رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) آٹے کے نرخ کنٹرول کرنے کے حکومتی اقدامات بے نتیجہ ثابت ہوئے اور ملک بھرمیں آٹامزید مہنگا ہوگیا،پندرہ کلو آٹے کا تھیلا 1550 سے لیکر 2600روپے تک میں فروخت ہونے لگا۔ سندھ، خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں فلور ملز کو سرکاری گندم کا اجراشروع نہ ہونے سے صورتحال بگڑنے لگی۔ قیمتوں میں مسلسل اضافے سے عوام پریشان ہوگئے۔سیلاب زدہ علاقوں میں تقسیم کیلئے بھی آٹے کی طلب میں غیر معمولی اضافہ ہوگیا ہے۔ مختلف شہروں میں نجی گندم کی قیمت 3500روپے فی من سے بھی زیادہ ہوگئی۔پشاور میں نجی گندم کی قیمت 3550روپے من، کراچی میں 3600روپے، راولپنڈی 3625روپے، لاہور 3500روپے من تک پہنچ گئی۔ اسی طرح لاہور میں 15کلو آٹا آٹے  تھیلا کی قیمت1550روپے، راولپنڈی 1750، پشاور 2300سے 2500روپے، کراچی میں 2200روپے تک پہنچ گئی۔بلوچستان میں گندم نہ ہونے سے فلورملز بند ہوگئیں اور پنجاب سے آنیوالے آٹے کی قیمت2600روپے سے زائد ہوگئی۔وفاقی حکومت نے گندم کی قیمتوں کو کم کرنے کیلئے نجی شعبے کو امپورٹ کی اجازت دینے پر دوبارہ غور شروع کردیا۔ گزشتہ ہفتے اقتصادی رابطہ کمیٹی نے بھی نجی شعبہ کو 8لاکھ ٹن گندم امپورٹ کی سفارش کی تھی جسے وفاقی کابینہ نے مسترد کردیا تھا۔پنجاب میں آئندہ ہفتے سرکاری گندم آٹا کی قیمت میں ممکنہ اضافے پر دکانداروں اور ڈیلرز نے ذخیرہ اندوزی بھی شروع کردی۔ملک کے باقی شہروں کی طرح کراچی میں بھی آٹے کا بحران پیدا ہوگیا اور فی کلو آٹے کی قیمت 125روپے تک پہنچ گئی۔ چھوٹی چکی کا آٹا 135روپے کلو فروخت ہونے لگا۔ سندھ میں سرکاری قیمت 4000روپے فی من مقرر کرنے کے بعد اوپن مارکیٹ میں گندم کی قیمت کو پر لگ گئے جہاں گندم کی قیمت 110روپے کلو تک پہنچ گئی۔ فلور ملوں نے 15کلو والے آٹے کے تھیلے کی قیمت میں 50روپے اضافہ کر دیا جس کے بعد اس کی قیمت1550روپے سے بڑھ کر1600روپے ہو گئی ہے۔فلور ملوں کے مطابق ہم اوپن مارکیٹ سے گندم خرید کر آٹا بنا رہے ہیں اور اس وقت اوپن مارکیٹ میں گندم کی فی من قیمت3600روپے فی من کے لگ بھگت ہے جبکہ باقی اخراجات اس کے علاوہ ہیں، اس بناء پرقیمتوں میں اضافہ کرنا نا گزیر ہے۔دوسری طرفمحکمہ خوراک پنجاب کے مطابق سرکاری سستا آٹا سیلابی علاقوں میں بھیجنے پر پابندی لگا دی گئی۔سیلاب متاثرین کیلئے سستا آٹا کسی صورت فراہم نہیں کیا جائیگا۔پابندی کے باوجود شہر لاہور میں سبز سستا تھیلا غائب ہوگیا۔لاہور میں سستے اٹے کی سپلائی متاثر ہو گئی۔محکمہ خوراک پنجاب کے دعوے ہوا ہو گئے۔فی کلو کھلا آٹا 90سے 100روپے کلو تک فروخت ہو نے لگا

آٹا بحران+

مزید :

صفحہ اول -