وزیراعلیٰ سندھ نے سیلاب سے متاثرہ علاقوں سے 75 فیصد پانی اکتوبر تک نکال دینے کا عندیہ دیدیا

وزیراعلیٰ سندھ نے سیلاب سے متاثرہ علاقوں سے 75 فیصد پانی اکتوبر تک نکال دینے ...
وزیراعلیٰ سندھ نے سیلاب سے متاثرہ علاقوں سے 75 فیصد پانی اکتوبر تک نکال دینے کا عندیہ دیدیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

عمرکوٹ (سید ریحان شبیر)وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نےکہا ہےکہ حکومت  کو سیلاب متاثرین کی مشکلات کا مکمل  احساس ہے ، انشااللہ 75فیصد پانی اکتوبر تک نکال دیں گے تاکہ گندم کی بوائی ہوسکے متاثرین کی بحالی کےلیے تمام تر وسائل بروئےکار لائےجارہےہیں ،وزیراعلیٰ سندھ شام گے اچانک ہی عمرکوٹ پہنچے تھے جبکہ مقامی میڈیا کو بھی وزیراعلیٰ سندھ کےدورے سے بالکل لاعلم رکھاگیا ،وزیراعلیٰ سندھ کو رین ایمرجنسی کے فوکل پرسن صوبائی سید سردار علی شاہ نے عمرکوٹ ضلع میں جاری سیلاب زدہ علاقوں اور متاثرین برسات کی بحالی کےلیے جاری ریلیف امدادی کاموں کےمتعلق بریفنگ دی ۔

اس موقع میڈیا سے بات چیت اور خیمہ بستی میں متاثرین سے خطاب میں انہوں نے  کہا کہ حکومت کو متاثرین کی مشکلات کا مکمل احساس ہے اسی لیے وہ خود گاہے بگاہے مسلسل سندھ کے ہر ضلع کادورہ کررہے ہیں، ریلیف کےکام میں کسی بھی قسم کی غفلت لاپرواہی کو برداشت نہیں کیاجائے گا۔

میڈیا سےخصوصی بات چیت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کاکہناتھاکہ سندھ میں اس مرتبہ ریکارڈ بارشیں ہوئی ہے محکمہ موسمیات کےمطابق اس دفعہ پورے سندھ میں گیارہ سو ملی لیٹر ریکارڈ بارشیں ہوئی سندھ میں  140ملین ایکڑ فٹ پانی موجود ہے دیگر صوبوں کا پانی اس کے علاوہ ہے۔

قبل ازیں  وزیراعلی سندھ کی اچانک آمد کاسن کر انتظامیہ کی دوڑیں لگ گئیں،  محکمہ تعلیم کے آفسران نے بھی پھرتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ٹینٹ سٹی میں ایمرجنسی میں سکول بھی قائم کردیا اور انتظامیہ کی جانب صحرائی علاقوں کی ریتلی ٹیلوں کی بھی صفائی کا عمل بھی تیزی سے جارہی ہے جبکہ وزیراعلیٰ سندھ کےلیےکیےگئےانتظامات کومتاثرین  برسات حسرت بھری نظروں سے دیکھتے  رہے۔