بلوچستان کے 13سابق اراکین اسمبلی نا اہل ،اپیلوں کی سماعت مکمل ، معامالات اعلیٰ عدلیہ کے پاس پہنچ گئے

بلوچستان کے 13سابق اراکین اسمبلی نا اہل ،اپیلوں کی سماعت مکمل ، معامالات ...
بلوچستان کے 13سابق اراکین اسمبلی نا اہل ،اپیلوں کی سماعت مکمل ، معامالات اعلیٰ عدلیہ کے پاس پہنچ گئے

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)الیکشن ٹربیونل نے بلوچستان کے 13سابق اراکین اسمبلی کو نا اہل قرار دے دیا ہے۔ بلوچستان الیکشن ٹربیونل نے 52امید واروں کی قسمت کا فیصلہ سنا یاجس میں سے 13سابق اراکین اسمبلی بھی نا اہل قرار دیا گیا جن میں احسان شاہ ، محبت خان مری ،ظہور حسین کھوسہ ،غفور لہڑی ،محمد خان طور ،بابو امین عمرانی ،کریم نو شیروانی ،شعیب نو شیر وانی کے نام شامل ہیں ۔الیکشن ٹربیونل سابق ارکان قومی اسمبلی مولوی آغا محمد اور ہمایوں عزیز کرد ،مولوی سرور موسیٰ خیل ،مولوی روز الدین کا کڑ ،سینیٹر حا فظ اللہ ،مولوی حنیف اور آزاد امید وار غلام قادر بگٹی کو بھی الیکشن لڑنے کی اجازت نہیں دی گئی۔دوسری جانب ریٹرننگ افسران کے فیصلوں کے خلاف الیکشن ٹربیونل نے اپیلوں کی سماعت کو مکمل کرلیا ہے اور متعدد امیدواروں نے الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف ہائی کورٹ کا رخ کر لیاہے۔ریٹرننگ افسران نے کراچی سے 1155امید واروں کی کاغذات نامزدگی مسترد کیے جن میں سے 241امیدواروں نے الیکشن ٹر بیونل سے رجو ع کیا جس پر الیکشن ٹربیونل نے 139امید واروں کی درخواستوں کو قبول جبکہ 102امید واروں کی درخواستوںکو مسترد کردیا ۔ادھرسابق صدر پر ویز مشرف سمیت نادر مگسی ،مراد علی شاہ ،احمد نواز جاکھرانی ،راجہ خان مہر ،ڈاکٹر نصر اللہ ،طارق اقبال اور عبدالعزیز میمن نے الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔

مزید :

قومی -