اہالیان القدس اپنے ہی شہر میں مہاجر بنائے جا رہے ہیں ¾ القدس فاﺅنڈیشن

اہالیان القدس اپنے ہی شہر میں مہاجر بنائے جا رہے ہیں ¾ القدس فاﺅنڈیشن

  

مقبوضہ بیت المقدس( اے این این ) القدس ترقیاتی فانڈیشن نے اسرائیلی بلدیہ کی جانب سے القدس کے رہائشیوں کے گھروں کو منہدم کرکے انہیں ہجرت پر مجبور کرنے کی کارروائیوں کی شدید مذمت کی ہے۔ فانڈیشن کا کہنا ہے کہ اس بابرکت شہر کے باسیوں کو زندگی کے اہم ترین رہائش کے حق سے محروم کیا جارہا ہے۔ اپنے اخباری بیان میں القدس فانڈیشن برائے ترقی کا کہنا ہے کہ مسجد اقصی کے اطراف پھیلے مسلمانوں کے تیسرے مقدس ترین شہر کی فضا اب خود اسی شہر کے باسیوں کے لیے سازگار نہیں رہی۔ یہاں کے رہنے والے شہریوں کے گھروں کو منہدم کیا جارہا ہے جس کے بعد یہ سب اپنے ہی شہر میں ایک ٹان سے دوسرے ٹان ہجرت پر مجبور ہو جاتے ہیں۔ انہدامی کارروائیوں کے ذریعے اسرائیل اہالیان القدس کو شہر چھوڑنے پر مجبور کرنا چاہتا ہے تاکہ اس شہر میں آبادی کا تناسب یہودیوں کے حق میں ہوجائے اور وہ بین الاقوامی برادری کے سامنے اس شہر کو یہودی شہر قرار دے سکے۔ القدس فانڈیشن نے اپنے بیان میں کہا کہ اسرائیلی دائیں بازو کی پارٹیوں اور حکومتی رہنماں کے بیانات میں القدس کے شہریوں کی املاک پر قبضہ کرنے کی ترغیب دی جارہی ہے۔ متعدد معروف صہیونی شخصیات نے القدس کو یہودیوں کا ابدی دارالخلافہ قرار دلوانے کے لیے القدس کے فلسطینیوں کی جائیدادوں پر قبضے کی ترغیب دی ہے۔ ان رہنماں کے خیال میں مشرقی القدس کو اسرائیلی دارالخلافہ بنانے کا خواب پورا کرنے کے لیے اس شہر میں فلسطینیوں کی تعداد تین فیصد سے بڑھنی نہیں چاہیے۔

مزید :

عالمی منظر -