شامی فوج کے فلسطینی مہاجرین پر حملوں میں پانچ افراد شہید

شامی فوج کے فلسطینی مہاجرین پر حملوں میں پانچ افراد شہید

  

دمشق( اے این این )شام میں دو سال سے جاری داخلی جنگ میں فلسطینی پناہ گزینوں پر ظلم وستم جاری ہے۔ شامی فوج نے مختلف فلسطینی مہاجر کیمپوں پر گولہ باری کرکے پانچ فلسطینیوں کو شہید کردیا۔ورکنگ گروپ برائے فلسطینی پناہ گزیں نے منگل کے روز جاری اپنے بیان میں کہا کہ شہید ہونے والے عدی ایمن قندیل کا تعلق الحسینیہ کیمپ سے تھا جو دو روز قبل اپنے گھر پر کی گئی بمباری میں شدید زخمی ہوگئے تھے۔ادھر یرموک کیمپ میں بھی گزشتہ روز خوفناک جھڑپیں ہوئیں جس میں نوجوان عبادہ عثمانی شہادت پا گئے۔ دارالحکومت دمشق کے قریب ہی واقع خان الشیخ کمیپ کے مختلف علاقوں پر کی گئی گولہ باری میں دو نوجوان محمد جمعہ قاسم اور احمد خلیل مرعی شہید ہوگئے۔ادھر یرموک کیمپ میں مسجد عبدالقادر حسینی کے احاطے میں ایک گولہ گرنے سے نوجوان فادی منصور جام شہادت نوش کرگئے ہیں۔ اس واقعے میں متعدد افراد زخمی بھی ہوئے۔ورکنگ گروپ نے بتایا کہ فلسطینی مہاجرین کے حندرات کیمپ میں معاشی حالات انتہائی دگرگوں ہو گئے ہیں، وہاں پر کسی بڑے انسانی بحران کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے۔ شامی فوج کے محاصرے کی سبب یہاں پر دواں اور خوراک کی شدید قلت ہے۔ شیر خوار بچے دودھ سے محروم ہوگئے ہیں۔

کیمپ کے قریب ہونے والی جھڑپوں سے کیمپ میں تمام اشیا کی ترسیل اور آمد و رفت معطل ہو کر رہ گئی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -