اچانک زور دار دھماکہ ہوا اور اندھیرا چھا گیا، سینئر صحافی اظہر علی

اچانک زور دار دھماکہ ہوا اور اندھیرا چھا گیا، سینئر صحافی اظہر علی

  

پشاور (کرائم رپورٹر) پشاور یکہ توت خودکش حملے میں روزنامہ پاکستان پشاور کے سینئر صحافی اظہرعلی شاہ شدید زخمی ہوگئے جبکہ روزنامہ پاکستان کے سب ایڈیٹر طارق اسلم موقع پر شہید ہوگئے۔ اظہرعلی شاہ اور طارق اسلم جیسے ہی جلسہ گاہ میں پہنچے اور ایس ایچ او کوتوالی عابد رحمان کے ساتھ کھڑے ہوکر محو گفتگو میں مصروف تھے کہ اچانک زوردار دھماکہ ہوا دھماکے میں طارق اسلم موقع پر شہید ہوگئے جبکہ خوش قسمتی سے اظہرعلی شاہ اپنی موٹرسائیکل کھڑی کر رہے تھے کہ اتنی دیر میں دھماکہ ہوگیا اور اظہرعلی شاہ اس دھماکے میں شدید زخمی ہوگئے۔ سینئر صحافی اظہرعلی شاہ نے بات چیت کے دوران بتایا کہ میں اور طارق اسلم جلسہ گاہ میں جا رہے تھے کہ طارق اسلم اچانک موٹرسائیکل سے اتر کر ایس ایچ او کوتوالی کو جا ملے ابھی وہ ایس ایچ او کوتوالی سے مل رہے تھے کہ خودکش حملہ آور نے موقع ہاتھ سے نہ جانے دیا اور خود کو دھماکے سے اڑالیا۔ زوردار دھماکے کی وجہ سے لوگوں کی چیخیں نکل گئیں اور چاروں طرف اندھیرا چھاگیا۔ سید اظہرعلی شاہ نے بتایا کہ جیسے ہی دھماکہ ہوا میں موٹرسائیکل کے پاس کھڑا تھا کہ زمین پر گرگیا تقریباً 25 منٹ تک میں وہیں پڑا رہا اور اتنی دیر میں مقامی اخبار کے جرنلسٹ اور اس کے بیٹے نے مجھے اٹھایا اور ایمبولینس میں ڈال کر ہسپتال منتقل کردیا۔ اس دوران میں اپنے ہوش وحواس کھو بیٹھا تھا کیونکہ میرا ایک ساتھی اس دھماکے میں مجھ سے بچھڑ گیا تھا جس کی وجہ سے میں اپنے زخموں کو بھول چکا تھا۔ واضح رہے کہ اظہرعلی شاہ اس وقت شدید زخمی حالت میں ایل آر ایچ ہسپتال میں زیرعلاج ہیں ان کے جسم کے مختلف حصوں میں بم کے چھرے پیوست ہوگئے اور ان کا پاﺅں بھی شدید زخمی ہے جس کی وجہ سے خدشہ ہے کہ اظہر علی شاہ اپنے پاﺅں سے محروم نہ ہوجائے۔

مزید :

صفحہ اول -