فنڈ کی قلت بچوں کو خسرہ ویکسین لگانے کا کام شروع نہ ہو سکا

فنڈ کی قلت بچوں کو خسرہ ویکسین لگانے کا کام شروع نہ ہو سکا

  

                لاہور (ج الف /جنرل رپورٹر) صوبائی دارالحکومت میں بے قابو ہونے والے خسرے کے وائرس سے بچوں کو بچانے کے لئے حفاظتی ٹیکے یا ویکسین لگانے کا اعلان بیانات سے آگے نہیں بڑھ سکا شہر میں روزانہ خسرہ کے مریضوں کی اموات واقع ہورہی ہیں لیکن انہیں بچانے کے لئے محکمہ صحت اعلانات کے باوجود ویکسین شروع نہیں کرسکا واضح رہے کہ محکمہ صحت نے اعلان کیا تھا کہ ہنگامی بنیادوں پر 10سال تک کے بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگانے کا کام شروع کیا جارہا ہے جس کے لئے فنڈز کا تخمینہ 1ارب 70کروڑ روپے لگایا گیا تھا ذرائع نے بتایا کہ فنڈز کا بندوبست نہ ہونے سے محکمہ صحت خسرے سے بچاﺅ کے لئے بچوں کو ویکسین کرنے کا عمل شروع نہیں ہوسکا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اس کے ذمہ دار محکمہ صحت اور حکومت ہے خسرہ ایک وبائی مرض میں تبدیل ہوچکا ہے اگر فوری طور پر خسرے کے مرض سے مزید بچوں کو بچانے کے لئے ویکسین شروع نہ کی گئی تو مرض میں تیزی آئے گی اس حوالے سے ڈی جی ہیلتھ ڈاکٹر تنویر احمد کا کہنا ہے جون میں ویکسین شروع کریں گے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -