مسلم لیگ ن آزاد گروپ پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار جیت کیلئے پر عزم

مسلم لیگ ن آزاد گروپ پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار جیت کیلئے پر عزم

  

                                  ملک بھر میں اسو وقت الیکشن کا وقت قریب ہے اور تمام سیاسی پارٹیاں اپنی پوزیشن بہتر بنانے کے لئے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہی ہیں تمام حلقوں میں امیدوار سیاسی دھڑا بندیوں میں مصروف اور ووٹروں کو منانے دن رات ایک کئے ہوئے جن لوگوں نے منتخب ہونے کے بعد کبھی کی خبر تک نہ لی آج وہ ہر امیر غریب کے دکھ سکھ میں شریک ہورہے ہیں۔ حیران کن بات یہ ہے کہ اب یہ لوگ بن بلائے مہمان بن کرچلے آتے ہیں اور عوام سے اپنے گزرے ہوئے وقت کی معافی مانگ کر اپنی راہ ہموار کرنے میں مصروف ہیں لیکن موجودہ الیکشن 2013ءمیں پاکستان کی عوام جاگ چکی ہے۔ وہ اب ان سیاسی شعبدہ بازوں کے چکر میں آنے والے نہیں وہ بھی بخوبی سمجھتے ہیں کہ سیاسی لوگ ڈنگ ٹپاﺅ پالیسی کے تحت انہیں بے وقوف نہیں بناسکتے عوام اب ملک میں تبدیلی کے خواہاں ہیں اور پاکستان کی غیور عوام اپنے ذاتی مفادات کی بجائے ملک کے مفادات کو ترجیح دے رہے ہیں اور اب وہ ان لوگوں کو ووٹ دیکر کامیاب بنائیں گے جن کا ماضی اور حال کرپشن سے پاک ہو نیک اور مخلص قیادت کا انتخاب ان کی پہلی ترجیح ہے ضلع حافظ آباد کا شمار پنجاب کے پسماندہ ترین علاقوں میں ہوتا تھا، لیکن سابقہ دور میں جتنی ترقی حافظ آباد نے کی شاید ہی کسی اور ضلع نے کی ہوگی۔ حافظ آباد کے چاروں اطراف کارپیٹڈ سڑکوں کے جال بچھا دیئے اب صرف حافظ آباد سے گوجرانوالہ جی ٹی روڈ کا کام باقی ہے جسکی تعمیر بھی تیزی سے جاری ہے۔ضلع حافظ آباد قومی اسمبلی کی 2 اور صوبای اسمبلی کی 3 نشستوں پر مشتمل ہے گزشتہ الیکشن میں مسلم لیگ ن نے ایک قومی اور 2 صوبائی اسمبلی کی نشستیں حاصل کیں ، قومی اسمبلی کی ایک سیٹ مسلم لیگ ق اور صوبائی اسمبلی کی ایک نشست پاکستان پیپلز پارٹی نے حاصل کی۔

قصبہ ونیکے تارڑ قومی اسمبلی این اے 102 اور پی پی 106 میں آتا ہے اس وقت اس حلقہ میں مسلم لیگ ن پاکستان تحریک انصاف اور مہدی حسن بھٹی آزاد گروپ نے اپنے امیدواروں کا اعلان کردیا۔ این اے 102 میں سابق صدر رفیق تارڑ کی بہو سابق ایم این اے سائرہ افضل تارڑ مسلم لیگ ن کی طرف سے امیدوار ہیں جبکہ تحریک انصاف نے سابق ناظم چودھری ریاض احمد تارڑ کو نامزد کیا ہے اور مہدی حسن بھٹی آزاد گروپ کی طرف سے سابق ایم این اے چودھری مہدی حسن بھٹی کے بڑے بیٹے سابق صوبائی وزیر چودھری شوکت علی بھٹی الیکشن لڑرہے ہیں، جبکہ پی پی 106 میں پاکستان مسلم لیگ ن نے سابق ایم پی اے چودھری اسد اللہ ارائیں کو ٹکٹ جاری کردیا ہے۔ پاکستان تحریک انصاف نے سابق ناظم چودھری قاسم علی تارڑ اور آزاد گروپ نے رائے ریاست علی کھرل کو اپناامیدوار نامزد کردیا ہے۔ مسلم لیگ ن کے امیدواروں کو خاصی پذیرائی مل رہی ہے اور دیہاتیوں کے دیہات سائرہ افضل تارڑ ارو چودھری اسد اللہ ارائیں کی حمائت کا اعلان کررہے ہیں۔ دریں اثناءونیکے تارڑ قصبہ میں چودھری احمد بلال تارڑ جنہوں نے 2003ء میں پیپلز پارٹی کے پلیٹ فارم سے ایم این اے کا الیکشن لڑا اور حلقہ این اے 102 میں ایک بڑا نام رکھتے ہی ان کے بھی ہزاروں ووٹر حلقہ میں موجود ہیں۔ چودھری احمد بلال تارڑ ایک ایماندار اور مخلص انسان ہیں اور دھڑے کے انتہائی پکے ہیں جس کے ساتھ چل پڑں پھر کچھ بھی ہوجائے پیچھے نہیں پلٹتے۔ انہوں نے گزشتہ الیکشن میں بھی اپنی کزن سائرہ افضل کی حمائت کرکے انہیں کامیاب کروایا اس وقت بھی وہ سائرہ افضل تارڑ کی انتخابی مہم چلائے ہوئے ہیں۔ حلانکہ سائرہ افضل تارڑ کے مقابلے میں ان کے سسر چودھری ریاض احمد تارڑ این اے 102 سے تحریک انصاف کے ٹکٹ پر الیکشن لڑرہے ہیں لیکن انہوںنے اپنے سسر چودھری ریاض احمد تارڑ کو یہ کہہ کر صاف انکار کردیا کہ ہماری اپنی ہمشیرہ الیکشن لڑرہی ہے انکا مقابلہ کرنا ہماری ذات کو زیب نہیں دیتا بلکہ وہ کہتے ہیں کہ مو جودہ وقت میں سائرہ افضل تارڑ کی حمائت نہ کرنا ان کی سیاسی خودکشی ہوگی اور وہ کسی صورت بھی اپنے سسر چودھری ریاض احمد تارڑ کی حمائت نہیں کرسکتے۔ دریں اثناءذیلدار گروپ کے اہم ستون حاجی بلال منیر تارڑ نے بھی سائرہ افضل تارڑ کی حمائت کے اعلان کے بعد حلقہ میں مسلم لیگ ن کے امیدواروں کی پوزیشن مضبوط ہوگئی ہے۔ چودھر مہدی حسن بھٹی آزاد گروپ نے بھی اپنی انتخابی مہم شروع کررکھی ہے اور وہ بھی اپنی جیت کیلئے پرعزم ہیں۔ چودھری شوکت علی بھٹی کہتے ہیں کہ حلقہ میں انکا اپنا ذاتی ووٹ ہے اور انہیں کسی سیاسی جماعت کے سہارے کی ضرورت نہیں پی پی 106 میں چودھری اسد اللہ ارائیں مسلم لیگ ن کے امیدوار ہونے کی وجہ سے اپنی جیت کیلئے پرعزم اور رات گئے تک اپنی انتخابی مہم چلاتے نظر آتے ہیں وہ کہتے ہیں کہ عوام ان کو میاں نواز شریف کی ذات اور حلقہ میں ہر امیر غریب کے دکھ درد میں شریک ہونے اور ترقیاتی کاموں کی وجہ سے ووٹ دیکر کامیاب کروائیں گے۔ تارڑ گروپ کے سابق ناظم چودھری قاسم علی تارڑ مسلم لیگ ن چھوڑ کر تحریک انصاف میں چلے گئے ہیں اور انہوں نے تحریک انصاف کا ٹکٹ حاصل کرکے پی پی 106 سے الیکشن لڑنے کا اعلان کردیا ہے۔ گزشتہ روز جب وہ ٹکٹ لیکر حلقہ میں پہنچے تو عوام نے ان کا شاندار استقبال کیا اور پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں جبکہ رائے ریاست علی کھرل پی پی 106 سے آزادگروپ کی طرف سے الیکشن لڑرہے ہیں اور اپنی جیت کیلئے پرعزم ہیں دیکھتے ہی آگے کیا ہوتا اور کسی کی پوزیشن ہی بہتری آتی ہے۔

 صدر انجمن تاجراں نےو غلہ منڈی اےنڈ رائس ڈےلر اےسوسی اےشن سےالکوٹ ،چئےرمےن کےنال سٹی و سابق وائس

مزید :

الیکشن ۲۰۱۳ -