کشمیر میں مظالم کی انتہا:عالمی برادری کردار ادا کرے

کشمیر میں مظالم کی انتہا:عالمی برادری کردار ادا کرے

  

وزیر اعظم نواز شریف نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں کے بہیمانہ مظالم کی شدید مذمت کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ فوجی طاقت سے تحریک آزادی کشمیر کو نہیں روکا جاسکتا۔کشمیریوں کو اپنی قسمت کا فیصلہ خود کرنے کا حق دینا ہوگا انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ عالمی برادری مسئلہ کشمیر کا کوئی منصفانہ حل تلاش کرکے بھارت کو مزید مظالم سے روکے۔وزیر اعظم نواز شریف نے مظلوم اور نہتے کشمیریوں کی تحریک آزادی کی بھرپور حمایت کرتے ہوئے عالمی برادری کو اس کا بنیادی اور حق پرمبنی فرض یاد دلایا ہے۔ دنیانے دیکھ لیا ہے کہ فوجی طاقت سے تحریک آزادئ کشمیر کو روکا نہیں جاسکا۔ مظلوم کشمیری گزشتہ 70سال سے اپنے حق خود ارادیت کے لئے جان و مال اور عزت و آبرو تک کی قربانیاں دے رہے ہیں۔ پنڈت نہرو یہ مسئلہ سلامتی کونسل میں خود لے کر گئے تھے، انہوں نے عالمی برادری سے وعدہ کیا تھا کہ کشمیریوں کو ان کا بنیادی حق دے کر اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا موقع دیا جائے گا لیکن بعد میں بھارتی حکمرانوں نے حیلوں بہانوں سے کشمیریوں کو حق خودارادیت سے محروم رکھا اور گزشتہ کئی دہائیوں سے کشمیری عظیم قربانیاں دے کر تحریک آزادی کو زندہ رکھے ہوئے ہیں۔

وزیر اعظم نواز شریف نے درست تجزیہ کیا ہے کہ فوجی طاقت کے بل بوتے پر کشمیریوں کی تحریک آزادی کو زیادہ دیر تک نہیں روکا جاسکتا۔ کشمیر حقیقی معنوں میں کشمیریوں کا ہے۔ وزیر اعظم نواز شریف نے اسی حوالے سے عالمی برادری کو اس کا اولین فریضہ یاد دلاتے ہوئے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیرکا منصفانہ حل تلاش کیا جائے اور اس کے ساتھ ہی بھارتی فوجیوں کو مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی سے بھی روکا جائے۔ اب عالمی برادری کا فرض ہے کہ وہ قول و فعل کے تضاد کی پالیسی ترک کرکے کشمیر کا دیرینہ مسئلہ مبنی برحق اصول کے تحت حل کرائے۔ مقبوضہ کشمیر میں کئی بار انتخابات کا ڈھونگ رچایا جاچکا ہے۔ اس بار بھی مودی سرکار کی انتظامیہ کے زیر سایہ الیکشن کا ڈرامہ رچایا گیالیکن کشمیریوں نے اس کا بائیکاٹ کیا اورٹرن آؤٹ دو فیصد سے بمشکل آگے بڑھ سکا۔ اس پر بھارتی فوجیوں نے مظالم کی انتہا کردی ہے۔ اس کو روکنا بے حد ضروری ہے۔

مزید :

اداریہ -