واپڈا حکام کی غفلت،70ایکڑ سے زائد تیار گندم جل گئی،مظاہرہ

واپڈا حکام کی غفلت،70ایکڑ سے زائد تیار گندم جل گئی،مظاہرہ

  

بستی ملوک،جلال پور پیروالہ،کوٹ سلطان،احمد پور شرقیہ،خانقاہ شریف(نمائندگان)واپڈا حکام کی غفلت کے باعث تاروں میں سپارکنگ سے لاکھوں کی گندم جل کر راکھ،کاشتکاروں(بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

کی دہائی،مالی امداد کا مطالبہ،واپڈا عملہ کیخلاف کارروائی کا بھی مطالبہ کیا گیا بستی ملوک سے نمائندہ پاکستان کے مطابق واپڈا حکام کی نااہلی غلط انداز میں لگائی گئی بجلی کی تاروں کی سپارکنگ کی وجہ سے گندم کی تیار فصل میں چنگاری گرنے سے آگ بھڑک اٹھی ۔آگ نے چند منٹ میں بارہ سے پندرہ ایکڑتیار گندم کی فصل کو راکھ کے ڈھیر میں تبدیل کردیا،متاثرہ کسان راشدکا کہنا تھا کہ ہم نے زمین ٹھیکہ پر لی تھی ہماری سال کی روزی آگ کی نظر ہو گئی ہے وزیر اعلٰ پنجاب سے اپیل ہے کہ ہمیں مالی امداد دی جائے ۔جلال پور پیروالہ سے نامہ نگار کے مطابق جلال پور شہر سے 3 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع بستی پہوڑاں موضع عمر پور میں اچانک گندم کی تیار فصل میں آگ لگ گئی ، اطلاع ملنے پر فائر بریگیڈ کی ایک گاڑی موقع پر پہنچ گئی لیکن پانی کی کمی کی وجہ سے آگ نہ بجھائی جا سکی، بعد ازاں مقامی افراد نے اپنی مدد آپ کے تحت آگ کے مقامات کے ارد گرد تیار فصلوں پر بلیڈ چلا کر زمین ہموار کر دی جس سے آگ کے مزید پھیلاو کا سلسلہ رک گیا۔ تاہم اس دوران غلام یٰسین، محمد اقبال، محبوب اور دیگر کئی کاشتکاروں کی مجموعی طور پر 30 سے 40 ایکڑ پر کاشتہ لاکھوں روپے مالیت کی تیار گندم جل کر تباہ ہو چکی تھی۔ مقامی افراد کے مطابق لوڈشیڈنگ کے سبب شہر میں ٹی ایم اے کے واٹر سٹور ٹینک خالی تھے آگ کا سلسلہ شروع ہونے کے بعد بھی بجلی کی سپلائی منقطع رہی جس کی وجہ سے قریبی اراضی میں لگی ہوئی ٹربائنیں نہ چلائی جا سکیں متاثرین کے مطابق بجلی ہونے کی صورت میں پانی کی موٹریں چلا کر آگ پر ابتدا ہی میں قابو پایا جاسکتا تھا۔کوٹ سلطان سے نامہ نگار کے مطابق چکنمبر170ٹی ڈی اے میں کاشتکار نے اپنی فصلات کٹائی کے بعد پتوں کو آگ لگائی تو آگ نے قریبی گندم کے کھیتوں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا جس سے محنت کش خادم حسین ولد سلطان محمودکی 7جبکہ ریاض احمد واندر کی 6یکڑ فصلات جل کر خاکستر ہو گئیں ،مکینوں نے ریسکیو 1122کو اطلاع دی تو انہوں نے پہنچ کر مزید نقصان سے بچا لیا ۔احمد پور شرقیہ سے سپیشل رپورٹر کے مطابق مسلم لیگ ن کے جنرل کونسلرجام عبیداللہ انورکھورکے الحاج محمدعاشق کھور نے اپنے بیٹے حاجی سیف اللہ اور اہل علاقہ کے ہمراہ بتایا کہ میرارقبہ واقع فاطمہ ٹاؤن کے ساتھ میں نے ساڑھے تین ایکڑ اراضی پر گندم کاشت کی ہوئی تھی گندم کی کٹائی کرکے رکھی ہوئی تھی میری زمین سے شاہی والا، ڈیراور فیڈر کی ایل ٹی تاروں کی لائن گزررہی ہے دو سال قبل میری فصل جمپرکے جلنے سے جل کر راخ ہوگئی تھی میں نے واپڈاکے افسران کو متعددبار بتایا ہے کہ میری زرعی اراضی سے ایل ٹی کی تاروں اور کھمبوں کو دوسری جگہ شفٹ کیاجائے لیکن انہوں نے کچھ نہ کیا آج پھر جمپرشارٹ ہونے کی وجہ سے ساڑھے تین ایکڑ پر گندم کٹائی کرکے رکھی ہوئی تھی وہ جل کر خاکسارہوگئی ہے اسسٹنٹ منیجر سیکنڈسب ڈویثرن محمدحیات تنیو، ایل ایس حسین احمدغوری اور متعلقہ لائن مین جاوید اقبال اور اسلم وغیرہ کی غفلت کی وجہ سے میری چارلاکھ روپے مالیت کی گندم کی فصل جل گئی ہے آگ بجھانے کیلئے 1122اور بلدیہ والوں کو اطلاع دی لیکن کسی نے بھی آگ بجھانے کیلئے اپنی گاڑی موقع پر نہ بھیجی متاثرہ شخص کے ہمراہ اہل علاقہ نے میپکو سیکنڈ ڈویثرن کے اسسٹنٹ منیجرمحمدحیات تنیو اور ان کے سٹاف کی غفلت کے خلاف سخت احتجاج کیا اور نعرہ بازی کی ، حاجی محمدعاشق کھورنے چیف انجینئر واپڈا مسعودصلاح الدین ،وفاقی وزیر پانی وبجلی چوہدری عابد شیرعلی اور وزیر اعظم پاکستان میاں محمدنوازشریف سے نقصان کے ازالہ اور ذمہ دار ملازمین کے خلاف کاروائی کامطالبہ کیا۔ خانقاہ شریف سے سٹی رپورٹر کے مطابق چنی گوٹھ فوڈ سنٹر پر بیس اپریل کو کاشتکاروں کوباردنہ کی فرامی اور گندم کی خرید داری کا افتتاح ہونا تھا چنی گوٹھ فوڈ سنٹر پر عملے کی غفلت سے بوریوں کو آگ لگ گئی بوریوں کی تقسیم سے قبل آگ لگ گئی چیرمین فوڈ کنٹرورل سے جب موقف لیا گیا توانہوں نے اظہار لاعلمی کیا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -