تحریک انصاف کا حکومت مخالف ملک گیر تحریک چلانے کا فیصلہ

تحریک انصاف کا حکومت مخالف ملک گیر تحریک چلانے کا فیصلہ

  

اسلام آباد ، پشاور(آن لائن)چیئرمین عمران خان کی زیر صدارت پاکستان تحریک انصاف کی قیادت کا اہم اجلاس منعقد ہوا، جس میں بیک وقت کراچی، لاہور ، اسلام آباد سے پارٹی قائدین نے شرکت کی۔ مرکزی میڈیا ڈیپارٹمنٹ کی جاری کردہ خبر کے مطابق اجلاس میں ملکی مجموعی صورتحال اور پانامہ کے ممکنہ فیصلے کے خدوخال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیساتھ وفاقی حکومت کی جانب سے بلند وبانگ دعوؤ ں اور وعدوں کے باوجود بجلی کی لوڈشیڈنگ میں ناقابل برداشت اضافے کی شدید الفاظ میں مذمت کرنے سمیت بجلی کی غیر اعلانیہ و طویل بندش اور گردشی قرضوں کیخلاف ملک گیر تحریک چلانے کا فیصلہ کیا گیا۔ اجلاس میں قائدین نے کراچی کے امن کو سیاست کی نذر کرنیکی کوششوں کی شدید مذمت کی اور رینجرز کے مستقبل کو سیاسی مک مکا کی بھینٹ چڑھانے کی کوششوں کو انتہائی تشویشناک قرار دیا۔اجلاس کے شرکاء نے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ اور وزیرداخلہ کی پریس کانفرنس کے مختلف پہلوؤں پر بھی تفصیلی غورکیا اور یہ طے کیا گیا کہ نواز شریف کی موجودگی میں پاکستان سے منی لاندرنگ کا خاتمہ ناممکن ہے۔وزیرا عظم اور ان کے سمدھی وزیرخزانہ خود منی لانڈرنگ میں ملوث رہے ہیں۔علاوہ ازیں تحریک انصاف نے ڈان لیکس کی تحقیقاتی رپورٹ منظر عام پر لانے کیلئے حکومت پر دباؤ بڑھانے کا بھی فیصلہ کیااور اس عزم کا اظہار کیا کہ تحریک انصاف ملکی سلامتی سے متعلق اس اہم معاملے کو سرد خانے کی نذر نہیں ہونے دے گی۔اس سلسلے میں وفاقی حکومت کی جانب سے معاملے کو دبانے کی کسی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائیگا۔دریں اثناء ایک اور جاری کردہ خبر میں کہا گیا ہے کہ چین میں پختونخوا حکومت کا "روڈ شو" انتہائی کامیابی سے جاری ہے۔ وزیر اعلیٰ پرویز خٹک سمیت سینئر وزراء اوربڑے پیمانے پر سرمایہ کار بھی روڈ شومیں شریک ہیں۔ چینی سرمایہ کاروں کوراغب کرنے کیلئے وزیراعلی پرویز خٹک 60رکنی وفدکے ہمراہ 105 ترقیاتی منصوبوں میں سرمایہ کاری کی پیشکش کیساتھ چین میں موجود ہیں۔ ترقیاتی منصوبوں میں صوبائی حکومت کے 78 جبکہ 27 نجی منصوبے شامل ہیں۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -