چارسدہ میں بجلی کی ناروا لوڈ شیڈنگ کیخلاف تمام سیاسی جماعتوں کا احتجاج ،ریلی

چارسدہ میں بجلی کی ناروا لوڈ شیڈنگ کیخلاف تمام سیاسی جماعتوں کا احتجاج ،ریلی

  

چارسدہ (بیورو رپورٹ) چارسدہ میں بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ کے خلاف تاریخی احتجاج ۔ جماعت اسلامی ، اے این پی ، قومی وطن پار ٹی ، جے یوآئی ، پی ٹی آئی اور تاجر تنظیموں پر مشتمل آل پارٹیز کانفرنس کی کال پر ایکسین کے دفتر کے سامنے احتجاجی دھرنا ۔ احتجاج ریلی میں بھینس کے آگے بین بجتا رہا ۔ آج تا دم مرگ بھوک ہڑتال اور پہیہ جام ہڑتال کا اعلان کیا جائیگا۔ احتجاجی مظاہرے میں رکن قومی اسمبلی مولانا سید گوہر شاہ ، ایم پی اے فضل شکور خان ، ضلع ناظم فہد ریاض خان ، تحصیل ناظم خلیل بشیر خان اور منتخب بلدیاتی نمائندوں کی بھی شرکت ۔ تفصیلات کے مطابق چارسدہ میں بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ کے خلاف عوام کا پارہ چڑھ گیا ۔ جماعت اسلامی ، اے این پی ، قومی وطن پار ٹی ، جے یوآئی ، پی ٹی آئی ، تاجر تنظیموں متحدہ شاپ کیپرز فیڈریشن اور تاجر اتحاد پر مشتمل آل آل پارٹیز کانفرنس کی کال عوام اور تاجروں کی بڑی تعداد ٹی ایم اے چارسدہ میں جمع ہو گئی ۔ واپڈا کے ستائے عوام نے اے پی سی کی کال پر ایکسین کے دفتر کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا ۔ احتجاجی دھرنے میں ضلع بھر کے مختلف سیاسی جماعتوں اور تاجر تنظیموں کے عہدیداروں اور کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔ دھر نے کے دوران مشتعل افراد نے بھینس کے آگے بین بجا کر انوکھا احتجاج کیا اور ساتھ واپڈ ا، پیسکو انتظامیہ ، وفاقی حکومت اور وزیر پانی و بجلی عابد شیر علی خلاف شدید نعرہ بازی کی ۔ احتجاجی مظاہرے خطاب کر تے ہوئے رکن قومی اسمبلی مولانا سید گوہر شاہ ، سابق ایم این اے مولانا غلام محمد صادق ، ایم پی اے فضل شکو ر، ضلع ناظم فہدر یاض ، ضلعی نائب ناظم حاجی مصور شاہ، تحصیل ناظم خلیل بشیر خان عمر زئی، ڈسڑکٹ ممبر مفتی طاہراللہ ، ضلع کونسل کے ممبر شاہد اللہ ، ایکشن کمیٹی کے ممبران فقیر حسین لالا ، افتخار حسین صراف، حکیم اللہ فوجی ، تحسین عبداللہ ، ولی محمد ، عطاء اللہ خان ، طارق خان ، جابر خان ، میاں رحم بادشاہ ، ضلع کونسل میں اپو زیشن لیڈر قاسم علی خان محمد زئی سمیت دیگر مقررین نے خطاب کر تے ہوئے چارسدہ میں ظالمانہ اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ پر شدید تنقید کی اور ایکسین چارسدہ کو اس تمام صورتحال کا ذمہ دار ٹھہرایا ۔ مقررین نے کہا کہ ظالمانہ لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے صارفین مشکلات کا شکار ہے ۔ مساجد ، گھروں ، تعلیمی اداروں اور سرکاری دفاتر میں اس غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی وجہ پانی تک ناپید ہو چکا ہے جبکہ تاجروں کا کاروبار ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے ۔ مقررین نے ظالمانہ لوڈ شیڈنگ کو تاجروں اور عوام کا معاشی قرار دیتے ہوئے واضح کیا کہ اگر اس صورتحال کی اصلاح نہ کی گئی تو آج سے احتجاج کا دائرہ وسیع کرکے تا دم مرگ بھوک ہڑتال اور پہیہ جام ہڑتال کا اعلان بھی کیا جائیگا۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -