مردان سانحہ ،عبداللہ نے مقامی عدالت میں بیان ریکارڈ کرایا

مردان سانحہ ،عبداللہ نے مقامی عدالت میں بیان ریکارڈ کرایا

  

مردان (بیورورپورٹ)عبدالولی خان یونیو رسٹی مردان میں مشال واقعہ میں ان کے ساتھی عبداللہ نے مقامی عدالت میں پیش ہو کر اپنا ریکارڈ قلمبند کروا دیا یونیورسٹی انتظامیہ اور ٹیچر کو اپنا محسن قرار دیکر بری الذمہ قرار دے دیا پولیس کی بھاری نفری میں کی نگرانی میں مقامی مجسٹریٹ کی عدالت میں اسکی پیشی کر دی گئی تفصیلات کے مطابق مشال قتل کیس میں مقتول کے ساتھی عبداللہ ولد غوث الرحمان کو پیر کے روز مقامی مجسٹریٹ ،سول جج محب الرحمان کی عدالت میں پیش کیا گیا ایس پی آپریشن شفیع اللہ خان گنڈا پور اور دیگر پولیس افسران بھی موجود تھے مقتول مشال خان کے ساتھی عبداللہ کو پولیس کی سخت نگرانی میں عدالت میں لایا گیا اور اس کا بیان ریکارڈ کرایا گیا عبداللہ کی جانب سے مقامی عدالت میں تحریری طور پر جمع کردہ بیان میں یونیورسٹی انتظامیہ جسمیں پروفیسر ادریس ،پرویز فاروق اور ضیاء اللہ ہمدرد کو اپنا محسن قرار دیا گیا اورکہا کہ انکی کوششوں سے ہماری جانیں بچائی گیٗں ادھر مقتول مشال خان کیساتھی کے بیان سے یونیورسٹی انتظامیہ کی بے گناہی ثابت ہو گئی ادھر پیر کے روز 13گرفتار ملزمان کو انسداد دہشت گردی کے عدالت میں پیش کیا گیا جسے مزید دو دنوں کیلئے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا گیا ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -