ضلع کونسل صوابی اجلاس ،مردان یونیورسٹی واقعہ کی پرزور مذمت

ضلع کونسل صوابی اجلاس ،مردان یونیورسٹی واقعہ کی پرزور مذمت

  

صوابی (بیوروپورٹ ) ضلع کونسل صوابی نے ایک قرار داد کے ذریعے عبدالولی خان یونیورسٹی مر دان میں رونما ہونے والے واقعہ کی شدید مذمت کر تے ہوئے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس واقعہ میں جو بھی ملوث ہوں فی الفور گرفتار کر کے قانون کے کٹہرے میں لاکر قرار واقعی سزا دی جائے۔کونسل کا اجلاس قائم مقام کنوینئر حیات اللہ خمینی کی صدارت میں ہوا جس میں یونیورسٹی کے واقعہ میں قتل ہونے والے طالب علم مشال خان کے ایصال ثواب کے لئے اجتماعی فاتحہ خوانی کی گئی بعد ازاں ایجنڈے کے مطابق ڈی پی او صوابی محمد صہیب اشرف نے ضلعی پولیس کی کارکر دگی رپورٹ پیش کر تے ہوئے نئے ایکٹ میں ڈسٹرکٹ ناظم ،ڈسٹرکٹ کونسل ناظم ضلعی پبلک سیفٹی کمیشن کو حاصل کر دہ اختیارات ،فرائض منصبی اور ذمہ داریوں پر تفصیلی روشنی ڈالی انہوں ستمبر 2016سے لیکر 2017مارچ تک دوران 6ماہ میں پولیس کی جرائم پیشہ افرادکے خلاف کاروائی اور ضلع میں امن و امان کی بقا کے لئے کارکردگی پیش کی ۔ انہوں نے کونسل کو بتایا کہ۔جرائم پیشہ افراد کے خلاف 180بار سرچ اینڈ سٹرائیک اپریشن کی گئی ہے جن میں سے 9900مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیے تھے 354عدد مختلف نوعیت کے اسلحہ برآمد ،4336روند کارتوس برآمد اور 76کلو گرام ایکسپلوشیوں EXPLOSIVEبرآمد کر لی گئی ہیں ، علاوہ ازیں پولیس سپیشل ٹیم سنیف چیکنگ کے 360محصوص پوائنٹ پر چیکنگ کرتے ہوئے 2160مشتبہ افراد ،56 عدد مختلف نوعیت کے اسلحہ برآمد،389 روند کارتوس برآمدکر لی گئی ہے، 1528افراد کوزیر دفعہ 107/151 پابند ضمانت کیا ،پولیس نے 278افراد کوزیر دفعہ 107/150پابند ضمانت کیا، 179افراد کوزیر دفعہ 55/109پابند ضمانت کیا ،ڈی آر سیز چاروں سرکلوں میں مجموعی طور پر 978درخواستیں موصول ہوئی ہیں ،جن میں 649راضی نامے خوش اسلوبی کے ساتھ حل ہوئے ہیں ،29کو قانونی رائے کی حصول کے لئے بھیج دیا گیا ،اور 320راضی ناموں پر ممبران کی کوشش جاری ہے رقم کی تنازعے کے 232 معاملات راضی نامے کے ذریعے ،زمینی جائیداد کی تنازعے پر 263راضی نامے اور گھریلوں تازعے پر 147راضی نامے حل ہوئے ہیں ، جرائم پیشہ افراد کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے 489اشتہاریوں کو گرفتار کر چکے ہیں ،جرائم پیشہ افراد اور غیر قانونی اسلحہ 49عدد کلاشنکوف ،09کالاکوف،8عدد ریفلز،32شاٹ گن ،610عدد پستول،روند13959 کارتوس ، )193.32) Explosive(Kg (،( 1113 (Safety Fuse،13) (Detonator7۔موٹر سائیکلز اور دیگر گاڑیوں کی ویریفکیشن چیکنگ ٹوٹل :17145گاڑیوں کی چیکنگ کی گئی،جن میں سے )بغیر نمبر پلیٹ :(723APL4:589)۔(115 MVOقانون ایکٹ کے تحت 7828گاڑیاں مختلف غیر قانون ورزی کے خلاف چالان کی گئی ہیں)جن میں 5عدد گاڑیاں 523/550کے تحت مقدمہہ درج جبکہ987گاڑیوں کے خلاف 550مقدمہ درج رجسٹرد کی گئی ہیں،8۔موجودہ خالات کی پیشن نظر میں ڈی پی او صوابی نے کویک ریسپنس سکواڈ تیار کی،12پولیس اہلکار پر مشتمل ہر ٹیم روزانہ کی بنیاد پر جگہ جگہ حساس شاہراہ اور سڑکوں پرناکہ بندی کر کے باقائدہ اپنی کارکردگی کا رپورٹ ڈی پی او آفس میں پیش کرتے ہیں ،9۔ اسی سلسلے میں پبلک لیزان کمیٹی ممبران سے ڈی ایس پیز نے 24بار میٹنگ کرائی گئی ہیں جبکہ ،ایس ایچ او زنے 120بار میٹنگز اور بیٹ آفسران نے 384بار میٹنگز کراکرجرائم پیشہ افراد کے خلاف مکمل طور پر تعاون دہانی کرائی گئی ہے،10۔پولیس اسسٹنس لائنز(PAL) صوابی میں 1848افراد کی سیکیورٹی کلیئرنس سرٹیفکٹ ،چوری چکاری 68کیسسز درج رجسٹرڈ،گمشدگی کی رپورٹ 2024درج ،75گاڑیوں کی ویریفکشن کی گئی ،کرایہ داران کی 953فارمز پُر کی گئی ہے،دہشت گردی کی لہر میں 50%واقعات میں نمایاں کمی آئی ہے ،اس 6ماہ کے دوران 07مقدمہ دہشت گردی میں رجسٹرڈ ہوئی ہیں ،225جرائم پیشہ افراد کے خلاف درج ، زمینی تنازعات پر 65مقدمہ رجسٹرد، 100ایف آئی آر ٹریفک حادثا ت درج ہوئے ہے،اور پولیس اور منتخب نمائندگان کے مابین تعاون پر زور دیا اور پولیس کی طرف سے پر قسم کے تعاون کا یقینی دے دیا اس موقع پر ضلعی ناظم اعلیٰ امیر رحمن خان و دیگر ضلعی ممبران موجود تھے ،اس موقع پر ڈی پی او صوابی نے ضلعی پولیس کی چھ ماہ کی تفصیلی کاکردگی ایون میں پیش کی ،ضلع کونسل ممبران نے پولیس کی کارکردگی کو قابل تحسین قرار دیا اور پولیس کے ساتھ امن امان کی قائم اور بحالی میں اپنے بھرپور کردار کا یقینی دلایا،منتخب نمائندگان نے اپنی طرف سے پولیس کے کردار کو مزید فعال اور موثر بنانے کے لئے مختلف تجاویز اور آراء پیش کی ، اس سے پہلے2016اگست میں ضلع کونسل نے بھاری اکثریت سے ضلع پولیس کے لئے مزید 500اہلکاران کی بھرتی کے لئے متعلقہ قرار دادپیش کیا تھا جس پر ایک بار پھر بحث ومباحث کی گئی ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -